Wednesday, October 27, 2021  | 20 Rabiulawal, 1443

کوئٹہ میں پہاڑ پر بنائے گئے گھروں کو پانی پہنچانا مشکل ہو گیا

SAMAA | - Posted: Jun 29, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Jun 29, 2018 | Last Updated: 3 years ago

رپورٹ:محمد عاطف

علمدار روڈ کے پہاڑ پر 300 گز سے زائد اونچائی پر واقع ڈیڑھ سو سے زائد گھروں کی آبادی ہاشمی محلہ کے مکین پانی کس طرح حاصل کرتے ہیں یہ ایک مشکل ترین مرحلہ ہے 

علاقہ مکینوں کے مطابق پہاڑ کی چوٹی پر دس سال قبل اڑھائی کروڑ روپے کی لاگت سے واٹر ٹینک تعمیر کیا گیا لیکن بوسٹر مشین نصب نہ کئے جانے کی وجہ سے واٹر ٹینک آج تک غیر فعال ہے

واسا کی پائپ لائن صرف سڑک تک آتی ہے لیکن اونچائی پر واقع ڈیڑھ سو سے زائد گھروں تک پانی لے جانا ایک مشکل ترین مرحلہ ہے جس کے لئے علاقے مکین کہتے ہیں کہ انہوں نے ڈبل موٹریں نصب کر رکھی ہیں جن کے بھاری بل بھی وہ اپنی جیبوں سے ادا کرتے ہیں اس کے باجود پانی کو اونچائی تک لے جانا مشکل ہوتا ہے

علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ محلے میں رہائش پذٰیر افراد کی زیادہ تر اکثریت مزدوری کرتی ہے جب مزدوری کا وقت ہوتا ہے تو وہ پانی حاصل کرنے کی تگ و دو میں لگے رہتے ہیں جسکی وجہ سے گھر کا معاشی نظام چلانا بھی ان کے لئے ناممکن ہو گیا ہے

علاقہ مکین کہتے ہیں کہ ٹینکر مافیا صورتحال کا فائدہ اٹھا کر انہیں دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہی ہے ، اونچائی پر پانی لانے کے لئے فی ٹینکر 8 ہزار روپے وصول کئے جاتے ہیں ۔

علاقہ مکینوں کے مطابق اس سے قبل بھی 65 لاکھ روپے کی لاگت سے علاقے میں بڑا واٹر ٹینک تعیمیر کیا جانا تھا لیکن 65 لاکھ روپے منصوبے میں سے 22 لاکھ روپے ایک پل کی تعمیر پر خرچ کر دئیے گئے باقی ماندہ رقم کرپشن کی نظر ہو گئی ۔

صورتحال کے پیش نظر علاقہ مکین اس قدر مایوس ہیں کہ الیکشن میں کسی بھی امید وار اور سیاسی جماعت کو ووٹ دینے سے انکاری ہیں کہتے ہیں کہ ان کے بڑے اور عہدیدار صرف ان پر سیاست چمکاتے ہیں ، گرمی میں پانی کی قلت ہے تو سردیوں میں گیس نہیں ملتی نہ ہی سٹریٹ لائٹ نصب ہے ایسے میں کیوں کسی سیاسی جماعت کو ووٹ دیں سیاسی جماعتیں ووٹ دینے کی شرط پر مسئلہ حل کروانے کی یقین دہانی کرواتے ہیں ۔

علاقے میں پانی کی قلت کے حوالے سے علاقہ مکین کہتے ہیں کہ ان کا کام سڑک پر واقع گھروں تک پانی پہنچانا ہے پہاڑ پر واقع آبادی کی ذمہ داری ان کی نہیں جبکہ غیر فعال واٹر ٹینک پر علاقے کے سابق ایم  پی اے نے بھی کوئی توجہ نہیں دی

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube