موبائل فون صارفین کیلئے عید سے پہلے خوشخبری

June 13, 2018

سپریم کورٹ کے حکم پر موبائل فون کمپنیوں نے 100 روپے کے موبائل کارڈ پر 100 روپے کا بیلنس دینے کا اعلان کردیا، اطلاق آج رات 12 بجے سے ہوگا۔

سپریم کورٹ نے 11 جون کو اپنے حکم نامے میں موبائل فون کمپنیوں کو غیر قانونی ٹیکس کٹوتی سے روکا تھا، جسٹس اعجازالاحسن نے ریمارکس دئیے تھے کہ 100 روپے کے کارڈ پر 65 روپے کیوں ملتے ہیں، جس شخص پر ٹیکس نہیں لگتا اس سے کیوں وصول کررہے ہیں؟۔

موبائل فون کمپنیوں کے وکیل نے بتایا تھا کہ ٹیکس کارڈ پر نہیں پیکیج پر کٹتا ہے، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ پیکیج نے کلچر تباہ کردیا۔

سپریم کورٹ کے حکم کی روشنی میں موبائل فون کمپنیوں نے 100 روپے کے کارڈ پر 100 روپے بیلنس دینے کا اعلان کردیا، آج رات 12 بجے سے موبائل کارڈز پر ٹیکس معطل ہوجائیں گے۔

ذرائع کے مطابق موبائل فون کمپنیوں نے سپریم کورٹ کے حکم پر صارفین کو 15 روز کیلئے ریلیف دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

موبائل کے 100 روپے والے کارڈ پر ٹیکس کٹوتی کے بعد 64 روپے 28 پیسے ملا کرتے تھے لیکن 15 روز بعد ایف بی آر کے ساتھ مل کر ٹیکسز کا نیا میکنزم بنایا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ موبائل بیلنس ڈلوانے پر صوبے 19.5 فیصد جنرل سیلز ٹیکس وصول کررہے ہیں، ایف بی آر ودہولڈنگ ٹیکس کی مد میں 12.5 فیصد اور موبائل کمپنیاں 10 فیصد سروس چارجز وصول کرتی ہیں، جس پر جی ایس ٹی کی مد میں صارفین کو مزید ایک روپے 95 پیسے ادا کرنے پڑتے ہیں۔