دوماہ میں بجلی کےدوسرےبڑےبریک ڈاؤن کی وجہ سامنےآگئی

May 16, 2018

بجلی کا ناقص ترسیلی نظام ملک میں پاور بریک ڈاؤن  کی بڑی وجہ بن گیا۔بوسیدہ ٹرانسمیشن لائن اچانک ٹرپ کرنے سے دو ماہ میں دو بڑے بریک ڈاؤن ہوئے جس سے ملک کے بیشتر علاقے متاثر ہوئے۔

سماءکےمطابق بجلی کا ناقص ترسیلی نظام پاور بریک ڈاؤن کا بڑا سبب بناہے۔220 اور500 کےوی کی متعدد ٹرانسمیشن لائینز بوسیدہ ہیں۔نیپرا بھی متعدد بار حکومت کی توجہ مبذول کرا چکی مگر بےسودرہا۔ آج ہونے والا پاور بریک ڈاؤن رواں سال کا دوسرا بڑا بریک ڈاؤن تھا۔ گزشتہ ماہ چشمہ نیو کلیئر پلانٹ میں فنی خرابی وجہ بنی تھی اورآج بجلی کی طلب بڑھنے پر پیداوار میں اچانک اضافے کےبعد بریک ڈاؤن ہوگیا۔پاور پلانٹس کی پیداوار اچانک بڑھنے سے ٹرانسمشن لائن ٹرپ کر گئی اورفنی خرابی کےباعث ملک میں بجلی کا شارٹ فال 7 ہزار میگاواٹ تک پہنچ گیا۔

وزیر مملکت پانی و بجلی عابدشیرعلی نےکہاہےکہ بجلی بریک ڈاؤن کی وجوہات جاننے کےلیے تحقیقات ہوں گی اوربحران کے ذمہ داروں کا تعین کیا جائے گا۔عابد شیرعلی نےکہاکہ ہمارے پاس اس وقت بھی بجلی طلب کے مطابق ہے اورملک میں اس وقت بجلی کا کوئی شارٹ فال نہیں۔ وزیر بجلی نےدعوی کیاکہ بجلی کےنظام میں عارضی تعطل ہوا تھا اوربحالی کا کام جاری رہا۔

ادھر سینیٹرشیری رحمان نےملک بھرمیں بجلی کےبریک ڈاؤن پرسخت اظہارتشویش کیا۔انھوں نےکہاکہ آدھے ملک میں بجلی بریک ڈاؤن کی وجہ سےغائب  رہی اورآدھے ملک میں بجلی پہلے سے موجود نہیں تھی۔شیری رحمان نے بریک ڈاؤن کی تحقیقات کروانےکامطالبہ کیا۔