خواجہ سراؤں کے لئے لاہور میں پہلا اولڈ ایج ہوم بن گیا

Samaa Web Desk
May 15, 2018

رپورٹ : ثمن اقبال

جوانی میں ناچ گانا کرکے روزگار کمانے والے بڑھاپے میں اب لاوارث نہیں ہوں گے، خواجہ سراوں کے لئے لاہور میں پہلا اولڈ ایج ہوم بن گیا، جس کی تعمیر کا خیال ایک خواجہ سراء کو ہی آیا ۔

اندرون لاہور میں خواجہ سراوں کےلئے اولڈ ایج ہوم بنانے کا منصوبہ تھا لیکن لوگوں نے اعتراض اُٹھادیا، خواجہ سراوں کی فلاح کے لئے کام کرتی عاشی بٹ نے لاہور شہر سے دور ضلع فیروز والا کی حدود میں بے گھرفاؤنڈیشن کی بنیاد رکھ ڈالی ہے ۔

خواجہ سرا عاشی بٹ کا کہنا تھاکہ یہاں پر پچاس سے زائد عُمر کے خواجہ سراء رہیں گے اور وہ بھی جنہیں ایڈز یا ہیپاٹائٹس ہے اور جنہیں اُن کے اپنے بھی نہیں سنبھالتے۔

چھ کمروں پر مُشتمل اس عمارت میں خواجہ سراوں کی سہولت کا تمام سامان موجود ہے، یہاں کھانا پکانے سے لیکر صاف صفائی تک سب کام یہ خود فیملی ممبرز کی طرح کرتے ہیں۔

چند مُخیر حضرات کے تعاون سے عاشی بٹ نے اپنے ہم جنس ضرورت مندوں کو چھت تو فراہم کر دی، اب وہ یہاں صحت اور تعلیم کا سلسلہ شروع کرنا چاہتی ہے۔

ابتدائی مرحلے کے مکمل ہونے کے بعد یہاں خواجہ سراء بچوں کو تکنیکی تربیت بھی دی جائے گی۔