Wednesday, October 27, 2021  | 20 Rabiulawal, 1443

پنجاب یونیورسٹی نے غیر ضروری بولنے پر نوکری سے نکالا، پروفیسر کا دعویٰ

SAMAA | - Posted: Apr 14, 2018 | Last Updated: 4 years ago
SAMAA |
Posted: Apr 14, 2018 | Last Updated: 4 years ago

لاہور : پنجاب یونیورسٹی کے اسسٹنٹ پروفیسر عمار علی جان نے دعویٰ کیا ہے کہ یونیورسٹی انتظامیہ نے انہیں غیر ضروری طور پر مسائل اجاگر کرنے کے باعث نوکری سے فارغ کیا ہے جبکہ یونیورسٹی انتظامیہ نے اس کی تردید کردی ہے۔

اپنے فیس بک اسٹیٹس میں پروفیسر نے لکھا ہے کہ میں عام مسائل جیسے خواتین کو بااختیار بنانے کے معاملے پر بہت زیادہ توجہ دیتا تھا۔یہ مسائل کیمپس کے مجموعی امن کیلئے خطرناک ہونگے ۔

پنجاب یونیورسٹی کے انتظامیہ نے پروفیسر کے اس دعوی کو رد کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمار علی جان نے نوکری کے شرائط و ضوابط کی خلاف ورزی کی تھی جس پر انہیں نکالا گیا ہے ۔

ترجمان پنجاب یونیورسٹی خرم شہزاد نے بتایا کہ اکتوبر 2017 میں عمار علی جان کو مقرر کیا گیا تھا اور شرائط و ضوابط کے مطابق انہیں ایک مہینے کے دوران چارج سمبھالنا تھا تاہم انہوں نے ایسا نہیں کیا ۔

یونی ورسٹی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ پروفیسر کو ٹرمینیٹ نہیں کیا گیا بلکہ انہیں آفر لیٹر ہی نہیں دیا گیا ہے لیکن انہیں تنخواہ دی جائے گی ۔

عمار علی جان نے سماء سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ان کا پرانا کنٹریکٹ جون 2017 میں ختم ہوگیا تھا جس میں توسیع کی جارہی تھی، انہوں نے سوال کیا کہ اگر میں نے کوئی خلاف ورزی کی تو انتطامیہ نے مزید 7 ماہ تک کیوں مجھے پڑھانے کی اجازت دی ؟ ۔

پروفیسر کا کہنا تھا کہ یہ معاملہ آزادی اظہار رائے کا ہے انتظامیہ کسی کو آزاد خیالی ، اختلاف رائے اور حقوق کے بارے میں بولنے نہیں دیتی ہے۔

تاہم ترجمان پنجاب یونیورسٹی کا کہنا تھا کہ یونیورسٹی میں تقریبا بارہ سو اساتذہ ہیں اور تمام کو اپنے خیالات اجاگر کرنے کا حق حاصل ہے۔

عمار علی جان کا مزید کہنا تھا کہ مجھے منظور پشتین اور پختون تحافظ مومنٹ سے دور رہنے کیلئے کہا گیا تھا ورنہ مجھے بھاری نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔

عمار علی جان نے فیس بک اسٹیٹس میں لکھا کہ میں جانتا ہوں میں نے کچھ غلط نہیں کیا میں اپنی بے گناہی کسی بھی قانونی عدالت میں پیش کرسکتا ہوں ۔

عمار کے ایک دوست نے اپنی شناخت نہ بتانے کی شرط پر سماء کو بتایا کہ [۔۔۔] گزشتہ ماہ عمار نے لاہور یونیورسٹی آف منیجمنٹ سائنسس میں منظور پشتین کے گفتگو میں حصہ لیا تھا، اس نے بتایا کہ منظور پشتین 22 اپریل کو پھر لاہور کا دورہ کریں گے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube