Monday, January 24, 2022  | 20 Jamadilakhir, 1443

کراچی میں مزید گرم موسم کی پیش گوئی کردی گئی

SAMAA | - Posted: Mar 31, 2018 | Last Updated: 4 years ago
SAMAA |
Posted: Mar 31, 2018 | Last Updated: 4 years ago

کراچی: سائنسدانوں نےخبردار کیاہےکہ کراچی میں درجہ حرارت بڑھنےکےباعث رہائش مزید دشوارہوجائےگی۔

ماحولیاتی سائنسدان خرم پرویزامبراور ان کے ساتھیوں نے ایک تحقیق کےبعد بتایاہےکہ پاکستان میں سبی ،سکھر،حیدرآباد،دالبندین،بدین،بہاول نگر،کراچی اور ملتان گرم ترین شہرہیں۔

اس تحقیق کانام ہیٹنگ اینڈ کولنگ ڈگری،ڈیزمیپس آف پاکستان ہے۔اس تحقیق کےلیے مذکورہ شہروں کے درجہ حرارت کا پہلے کاڈیٹا استعمال کیاگیاہے۔

جیسے درجہ حرارت بڑھتاہے،ہوامیں نمی کا تناسب بھی بڑھ جاتاہے۔ گرم موسم میں جیسے ہی پسینہ آتاہے،ہوامیں پہلے سے موجود آبی بخارات کےباعث انسانی جسم کا درجہ حرارت بھی بڑھ جاتاہے۔ یہ اس لیے ہوتاہےکیوں کہ ہوامیں پہلے ہی نمی موجود ہوتی ہے اور جسم پرموجود پسینہ سوکھ نہیں پاتا۔

خرم پرویز کےمطابق کراچی کا درجہ حرارت مزید بڑھے گا۔اس کی وجہ مزید انڈسٹریوں کالگنا اورلوگوں کی بڑی تعداد کاکراچی رخ کرناہے۔اس حوالے سے مزید حکومتی اقدامات ضروری ہیں۔ انھوں نےبتایاکہ بھارتی شہر بنگلورمیں درخت لگانے سےدرجہ حرارت کوکم کیاگیا۔ یہ اقدام ہمارے ملک کےلیے رول ماڈل ہوسکتاہے۔ پاکستان میں 55 فیصد فضائی اخراج کی وجہ اے سی اور دیگر تنصیبات کا گھروں اور کمرشل عمارتوں میں بڑھتا ہوااستعمال ہے۔

 اس تحقیق میں یہ بھی بتایاگیاکہ سبی میں موجود ایک عمارت کی بجلی کا بل پارہ چنار میں موجود عمارت کے بل سے8 گنا زیادہ ہوگا۔اس کی وجہ گرم موسم ہے۔ ایک ائیر کنڈیشنر چھت پرلگے پنکھےسے20 گنا زیادہ بجلی لیتا ہے۔اس شرح کےمطابق  گرم ممالک میں اے سی کا استعمال مستقبل قریب میں 15 فیصد بڑھ جائےگا۔

اس تحقیق میں یہ بھی بتایاگیاہےکہ پاکستان کے سرد ترین شہروں میں پارہ چنار،چترال،مری،کوئٹہ ،کاکول،سیدوشریف،پنجگور،پشاور،اسلام آباد اورخضدار شامل ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube