مجھے ذلت کے ساتھ نکالا گیا،فاروق ستار

February 13, 2018

کراچی: متحدہ قومی مومنٹ پاکستان کے رہنماء ڈاکٹر فاروق ستار کہتے ہیں کہ کچھ لوگوں کو میری سربراہی کھٹک رہی ہے۔ افسوس ہوتا ہے کہ جو میں سوچ نہیں سکتا تھا وہ ہوگیا، مجھے ذلت کے ساتھ نکالا گیا۔


پی آئی بی کالونی میں اپنی رہائش گاہ کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے فاروق ستار نے کہا کہ میرے پاس کوئی ثبوت نہیں ہے کہ کون سازش کررہا ہے لیکن یہ مائنس ٹو کا فارمولا ہے جس پر عملدرآمد کیا جا رہا ہے۔ معاملہ میری سربراہی کا تھا، کامران ٹیسوری کا نہیں۔ انہوں نے کہا نقصان صرف مہاجروں کا ہوگا۔

فاروق ستار نے کہا کہ خالد مقبول اچھے آدمی ہے، میرے بھائی ہیں لیکن الیکشن کمیشن نے کہہ دیا کہ ہم یہ نہیں کہہ سکتے کون لیڈر ہے۔ انہوں نے بتایا کہ وسیم اختر اور نیر رضا ملازمین پر دباؤ ڈال رہے ہیں۔

فاروق ستار نے مزید کہا کہ خواجہ اظہار وہاں نہیں جارہے ہیں اور میری اطلاع ہے کہ سردار بھائی بھی وہاں نہیں جا رہے۔ ہیرسوہو، قادرخانزادہ، ذاکر اور شاہد بھائی واپس آجائیں، جن کے نام لیے ہیں وہ خاص طور پر آجائیں۔ سماء

Email This Post
 
 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.