فاروق ستار نے اجلاس میں شریک تمام اراکین کو معطل کردیا

SAMAA | - Posted: Feb 6, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Feb 6, 2018 | Last Updated: 3 years ago

کراچی: متحدہ قومی مومنٹ پاکستان کے سربراہ فاروق ستار نے غیرآئینی اجلاس، پریس کانفرنس اور فیصلہ کرنے والے رابطہ کمیٹی اراکین کو آج  شام اجلاس تک معطل کردیا۔ تفصیلات کے مطابق سربراہ ایم کیو ایم پاکستان فاروق ستار نے غیرآئینی اجلاس، پریس کانفرنس اور فیصلہ کرنے والے رابطہ کمیٹی اراکین کو معطل کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ...

کراچی: متحدہ قومی مومنٹ پاکستان کے سربراہ فاروق ستار نے غیرآئینی اجلاس، پریس کانفرنس اور فیصلہ کرنے والے رابطہ کمیٹی اراکین کو آج  شام اجلاس تک معطل کردیا۔


تفصیلات کے مطابق سربراہ ایم کیو ایم پاکستان فاروق ستار نے غیرآئینی اجلاس، پریس کانفرنس اور فیصلہ کرنے والے رابطہ کمیٹی اراکین کو معطل کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کامران ٹیسوری کا نہیں بلکہ میری سربراہی کا ہے۔

پی بی آئی کالونی میں میڈیا سے گفتگو میں ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ آزمائش ہے يا میرے خلاف سازش ابھي کچھ کہہ نہيں سکتا، لیکن رابطہ کميٹي نے میری اجازت نہ دينے کے باجود اجلاس کيا اور میری غیر موجودگی میں رابطہ کمیٹی کے افراد نے میڈیا سے گفتگو کرکے تنظیمی نظم کی خلاف ورزی کی۔

یہ بھی پڑھیئے؛ ایم کیوایم میں پھرکچھ ہونےوالاہے،فاروق ستارنےاہم ہدایت جاری کردی

فاروق ستار نے کہا کہ ایک شخص کو میرے ساتھ جوڑ کر جو کیا جا رہا ہے وہ صرف ایک بہانہ ہے۔ درحقیقت مسئلہ یہ کہ ہمیں طاقتور سربراہ ہمیں قبول نہیں اور اگر بےاختیار سربراہ چاہیے تو مجھے ایسی سربراہی منظور نہیں۔ انہوں نے شکوہ کیا کہ جگہ جگہ میری اہلیت کو لے کر باتوں پر سوال اٹھایا جاتا ہے۔

فاروق ستار نے کہا کہ ایک ایک کارکن جواب دے گا کہ میں انا گیر ہوں نہ انا پرست، ہم 22 اگست کو ختم ہو گئے تھے لیکن میں نے تنکا تنکا جوڑ کر پارٹی کو جوڑا اور سوا سال تک یہاں پہنچایا۔ میں چاہتا ہوں ایم کیو ایم پاکستان ایک قومی جماعت بنے اور اسکے کو آگے بڑھایا جائے۔ نئے آنے والوں کا راستہ روکنے کی بجائے نئے آنے والے کارکنان کو گلے لگایا جائے اور آگے بڑھنے دیا جائے۔ جرائم اور تشدد میں جو ملوث ہیں انھیں پارٹی میں نہیں رکھوں گا۔

یہ بھی پڑھیئے؛ ایم کیو ایم نے کامران ٹیسوری کو رابطہ کمیٹی سے نکال دیا

فاروق ستار نے کہا کہ 23 اگست کا فیصلہ نہ ہوتا تو سب کو معلوم ہے کہ کیا ہوتا۔ ایم کیوایم لندن سےعلیحدہ ہو کر بھی پارٹی کو چلا کر دکھایا، میں پاکستان میں پارٹی چھوڑ کر گیا نہ پاکستان کو چھوڑ کر گیا۔ انہوں نے کہا کہ ایم کیوایم کے دفاتر دوبارہ کھلنے کا سلسلہ شروع ہوا ہے حیدرآباد اور میرپورخاص کے زونل آفس کھل چکے ہیں۔

معطل اراکین کو چیلنج کرتے ہوئے فاروق ستار نے کہا کہ ایک جلسہ آپ کریں اور ایک ہم کرتے ہیں۔ آپ نشترپارک میں کریں ہم مزار قائد کے سامنے کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میری شرافت کو میری کمزوری نہ سمجھا جائے۔ غیروں سے پنگا لیا جاتا ہے، اپنوں سے پنگا نہیں لینا چاہتا۔ اب ہماری وہ طاقت نہیں، ہمارے کچھ لوگ ہمیں چھوڑ کر جاچکے۔

یہ بھی پڑھیئے؛ عامرخان کے ایم کیوایم رہنماؤں سے شکوے شکایت

سربراہ ایم کیوایم پاکستان کا کہنا تھا کہ ہم ایسے سینیٹ کے الیکشن پر لعنت بھیجتے ہیں، سینیٹ کا الیکشن جس کو لڑنا ہے لڑے، مجھے پارٹی بچانی ہے۔ 1992 میں حقیقی بن گئی تھی لیکن 2018 میں نہیں بنانے دیں گے، میں آفاق احمد کو تعاون کی درخواست دیتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ میرے پاس وہ ڈنڈا نہیں جو بانی ایم کیوایم کے پاس تھا۔ سماء

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube