لڑکی کی سرعام تذلیل؛پی ٹی آئی ایم این اے کا ساتھی کیخلاف عمران خان کوخط

November 11, 2017

پشاور:ڈیرہ اسماعیل خان میں سولہ سالہ لڑکی کی سرعام تذلیل کے معاملے میں رہنما پاکستان تحریک انصاف داور کنڈی نے علی امین گنڈا پور سے وزرات لے کرسخت کاررووائی کا مطالبہ کردیا۔

تحریک انصاف کے ایم این اے داور کنڈی نے پندرہ روزقبل ڈی آئی خان میں لڑکی کو برہنہ کرکے گلیوں میں گھمانے کے معاملے میں الزامات کی زد میں آنے والے وزیر علی امین گنڈا پور کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کردیا ہے۔ داور کنڈی نے اس حوالے سے چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان کو خط لکھ دیا۔

خط کے متن کے مطابق چیئرمین پی ٹی آئی سے کہا گیا ہے کہ علی امین گنڈا پورکے خلاف بھرپور کارروائی کی جائے ، عمران خان ، وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا سے کہیں کہ علی امین سے وزارت واپس لے کر معاملے کی مکمل تحقیقات کرائی جائیں۔ علی امین پور نے ملوث ملزمان کی بھرپور سرپرستی کرتے ہوئے انہیں مالی مدد بھی فراہم کی۔ ان کے خلاف فوری کارروائی کی جائے۔

داور کنڈی نےمتاثرہ لڑکی کے اہلخانہ سے ملاقات کی تھی جس میں اہلخانہ کی جانب سے معاملے میں علی امین گنڈا پور کے ملوث ہونے کی نشاندہی کی گئی۔

واضح رہے کہ سولہ برس کی لڑکی کو ڈیرہ اسماعیل خان کی سڑکوں پربرہنہ گھمایا گیا تھا، تھانہ چوہدوان کے ایس ایچ او نے متاثرین کا ساتھ دینے کے بجائے الٹا انہی کے خلاف مقدمہ کا ٹ دیا۔ بات وزیراعلیٰ کے نوٹس میں آئی تو جھوٹا مقدمہ ختم کراکے اصل ملزمان کی گرفتاری کا حکم دیا گیا۔

متاثرہ فیملی نے تحریک انصاف کے رہنما علی امین گنڈاپور کے چچا پر بھی الزام دھرتے ہوئے کہا کہ اسماعیل خان اصل ملزم سجاول کو چھوڑ کر گلستان شاہجان اور رمضان کو لے کر تھانے آگیا اور پٹواری بھیجا کہ موڑ پر آؤ اور وہاں آکر گواہی دو، اسماعیل خان ، علی امین کا چاچا ہے۔ جب وہاں گئے تو وہاں سب وہ لوگ بیٹھے تھے جنہوں نے مل کر لڑکی کو مارا تھا، وہ بڑے لوگ ہیں، ہم نے سمجھا کہ اگر نہیں گئے تو اٹھا کر لے جائیں گے، اس لیے ہم وہاں چلے گئے اور وہاں جاکر گواہی دے دی۔

یہ پہلی بار نہیں، صاف شفاف چلنے کی دعویدار تحریک انصاف کو علی امین گنڈا پور پہلے بھی کئی کلنک کے ٹیکے لگو اچکے ہیں۔ اسلام آباد لاک ڈاؤن کے دوران علی امین گنڈا پورسے شراب کی بوتلیں برامد ہوئی تھیں ۔۔ پولیس نے غیر قانونی اسلحہ ملنے کا بھی دعویٰ کیا تھا ۔۔ لیکن وزیر موصوف نے کہا کہ ان کی گاڑی میں شراب نہیں شہد تھا۔ اس معاملے سے تحریک انصاف کی خوب جگ ہنسائی ہوئی۔

علی امین گنڈا پورنے عید کے دوران اپنے حلقے میں ہیلی کاپٹر سے عیدی اور تحائف پھینکنے کا اعلان بھی کیا تھا جو بعد میں واپس لے لیا گیا۔ علی امین بلدیاتی انتخابات کے دوران بیلٹ باکس اٹھانے کے الزام میں خیبر پختونخوا پولیس کے ہاتھوں گرفتار بھی ہوچکے ہیں ۔ یہی نہیں، خیبرپختونخوا کے بجٹ اجلاس کے دوران اپوزیشن نے علی امین گنڈا پور پر پٹواریوں سے رشوت لینے کے الزامات بھی لگائے تھے ۔ سماء

Email This Post
 
 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.