Thursday, December 3, 2020  | 16 Rabiulakhir, 1442
ہوم   > پاکستان

قبضہ مافیا کے گرد زمین تنگ،سوک سینٹرپررینجرز کا دھاوا

SAMAA | - Posted: Jun 15, 2015 | Last Updated: 5 years ago
SAMAA |
Posted: Jun 15, 2015 | Last Updated: 5 years ago
قبضہ مافیا کے گرد زمین تنگ،سوک سینٹرپررینجرز کا دھاوا

ویب ایڈیٹر:

کراچی : سوک سینٹر میں واقع سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے دفتر پر رینجرز نے چھاپہ مار کر ریکارڈ کی جانچ پڑتال کی۔

کراچی میں قبضہ مافیا کیخلاف رینجرز اہل کار ایکشن میں آگئے، کراچی کی زمینوں پرقبضہ کس نےکیا؟کہانی کُھلنے لگی، کراچی میں قبضہ مافیا پرزمین تنگ ہونے لگی، رینجرز ذرائع کے مطابق رینجرز اہل کاروں نے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی عمارت کے پہلے فلور پر ملازمین سے پوچھ گچھ کی، قائم مقام ڈی جی بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی ممتاز حیدر سے بھی معلومات حاصل کیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی میں بے ضابطگیوں کی شکایات ہیں، سابق چیئرمین منظور قادر کا نام بھی مبینہ کرپشن اور بے ضابطگیوں کی سرپرستی کے حوالے سے لیا جاتا رہا ہے، رینجرز اہل کاروں نے چھاپے کے دوران ریکارڈ کا جائزہ بھی لیا۔

ملازمین اور افسران سے تفتیش کے دوران ملازمین کو بلڈنگ سے باہر جانے کی اجازت  نہیں دی گئی، پوچھ گچھ کے دوران قائم مقام ڈی جی  ممتاز حیدر کا ٹیلی فون اور موبائل بھی بند کرادیا گیا تھا، رینجرز اہل کاروں نے ممتاز حیدر سے گزشتہ  کئی  ماہ کے دوران پاس کیے گئے پلاٹس، فیلٹس اور دیگر زمینوں کے  نقشے قبضے میں لے لیے ، اس دوران رینجرز اہل کاروں نے چہروں کو  نقاب سے چھپایا  ہوا تھا، تاہم قائم مقام ڈی جی کو حراست میں نہیں لیا گیا۔

ذرائع کے مطابق قائم مقام ڈی جی سے  کمرہ  بند کرکے  تفتیش کی گئی، تفتیش کے دوران نارتھ ناظم آباد، جوہر ٹاؤن، گلشن اقبال، کلفٹن، جمشید ٹاؤن میں کمرشل منصوبوں، شاپنگ سینٹرز اور دیگر منصوبوں کیلئے پاس کرائے گئے نقشوں سے متعلق چھان بین کی گئی، ذرائع کے مطابق گزشتہ کئی عرصے سے  محکمے سے متعلق کرپشن اور بے ضابطگیوں کی شکایات موصول ہو رہی تھی، کہ پیسے دوں اور  اور کوئی بھی نقشہ  منظور کرالو، ملازمین اور ممتاز حیدر سے رینجرز اہل کاروں نے ڈھائی گھنٹے کی طویل تفتیش کی۔ اس سے قبل بھی محکمے کی کرپشن اور لینڈ مافیا کی شکایات سے متعلق  تحقیقات جاری تھیں، تاہم  اب عملی کارروائی کا آغاز  کردیا گیا ہے،  کہ اس میں کون کون سی کالی بھڑیں اس میں ملوث تھیں اور ہیں، ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ پچاس ارب مالیت کی زمنینوں کے غیر قانونی نقشے  محکمے کی جانب سے غیر قانونی طور پر  منطور کیے گئے۔ سماء

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube