Tuesday, October 20, 2020  | 2 Rabiulawal, 1442
ہوم   > پاکستان

سیاسی چیلنجزکےباعث ایکشن پلان پرعملدرآمدمیں وقت درکارہے،آئی ایس پی آر

SAMAA | - Posted: Jun 19, 2015 | Last Updated: 5 years ago
SAMAA |
Posted: Jun 19, 2015 | Last Updated: 5 years ago
سیاسی چیلنجزکےباعث ایکشن پلان پرعملدرآمدمیں وقت درکارہے،آئی ایس پی آر

ویب ایڈیٹر:

ماسکو :پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل عاصم سلیم باجوہ کا کہنا ہے کہ ملک میں درپیش سیاسی چیلنجز کی وجہ سے قومی ایکشن پلان پر عمل درآمد میں وقت لگے گا، قبائلی علاقوں میں عملی کارروائیاں اور دہشت گردوں کی مالی معاونت بند ہونا نیشنل ایکشن پلان کی کامیابی کا مظہر ہے۔

روس کی خبر رساں ایجنسی کو دیئے گئے انٹرویو میں پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل عاصم سلیم باجوہ کا کہنا ہے کہ نیشنل ایکشن پلان دہشت گردوں کی مالی مدد روکنے میں مؤثر ثابت ہو رہا ہے، منصوبے کی بڑی کامیابیاں قبائلی علاقوں دہشت گردوں کے خلاف فیصلہ کن اور عملی کارروائیاں ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ اگرچہ دہشت گردی کے خلاف نیشنل ایکشن پلان کے کچھ حصوں کو شروع کیا جا سجکچا ہے، لیکن سیاسی چیلنجز کے باعث ایکشن پلان کے بعض حصوں پر عمل درآمد کیلئے وقت درکار ہے۔

عاصم سلیم باجوہ کا مزید کہنا تھا کہ دہشت گردی سے نجات کیلئے کچھ پائلٹ پروگرام شروع کیے تھے جس کا دائر اب قومی سطح تک وسیع کردیا گیا ہے، پاکستانی وفد کے دورہ ماسکو کو مثبت قرار دیتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ پاکستان روس سے عسکری سازو سامان خریدنے کے معاہدے کو حتمی شکل دینا چاہتا ہے۔

واضح رہے کہ 2014 میں پشاور کے آرمی پبلک اسکول پر دہشت گردو کے سفاکانہ حملے میں 134 بچوں سمیت ایک سو پچاس افراد کی شہادت کے بعد دہشت گردوں کے خلاف کارروائی میں تیزی لانے کیلئے نیشنل ایکشن پلان ترتیب دیا گیا، جس میں تمام سیاسی اور مذہبی جماعتوں نے مشترکہ طور پر حکومت کا ساتھ دیتے ہوئے ملک دشمنوں کی سرکوبی پر لبیک کہا، نیشنل ایکشن پلان کے تحت نہ صرف دہشت گردوں، بلکہ ان کی مالی معاونت اور سہولت کاروں کے خلاف بھی گھیرا تنگ کیا جارہا ہے، جس میں فوج کو خاطر خواہ کامیابیاں ملی ہیں۔ سماء

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube