موقع ملتے ہی مجسمہ بھی لے جائیں گے

SAMAA | - Posted: Jul 19, 2021 | Last Updated: 5 days ago
Posted: Jul 19, 2021 | Last Updated: 5 days ago

 پاکستان کے قومی کھیل ہاکی کے ‘فلائنگ ہارس’ سمیع اللہ خان کے مجسمے کو ہاکی اورگیند سے محروم کردیا گیا۔

پولیس کے مطابق بہاولپورکے علاقہ ماڈل ٹاؤن اے کے خان چوک میں نصب اس مجسمے سے 3 روز قبل گیند اور ہفتے کی شب ہاکی بھی چوری کرلی گئی۔

قومی ہیروکے اس مجسمے کو پنجاب کے شہربہاولپور میں نصب کیے ایک ماہ سے بھی کم عرصہ گزراتھا۔ بہاولپور میں سمیع اللہ کا مجسمہ نصب کرنےکی وجہ یہ شہران کا جائے پیدائش ہونا ہے جہاں وہ 6 ستمبر 1951 میں پیدا ہوئے۔

کھیل کے میدان میں سمیع اللہ کی برق رفتاری کے باعث انہیں فلائنگ ہارس کا خطاب دیا گیا۔

سوشل میڈیا صارفین نے اس معاملے پرکی جانے والی ٹویٹس میں اپنے غم وغصے کا اظہارکیا۔

برکت خٹک نامی صارف نے سوال اٹھایا کہ یہ مجسمہ ہاکی کے بغیر کتنا بور ہورہا ہوگا؟ جس پرتبصرہ کیا گیا کہ موقع ملتے ہی مجسمہ بھی لے جائیں گے۔

ڈاکٹرجاوید اقبال نے اس اقدام کو شرمناک قراردیا۔

ایک صارف نے سوال اٹھایا کہ بطور قوم کیا ہم صادق وامین ہیں جو ہمیں حکمران صادق اور امین ملیں گے۔

ثناء جاوید نے لکھا کہ چند سو روپے کی چیزکا کس سے شکوہ کریں یہ قوم تو دن دہاڑے گٹر کے ڈھکن تک نکال کر لے جاتی ہے۔

مجسمے کی تصویر شیئرکرنے والے ایک صارف نے مایوسی کا اظہارکرتے ہوئے لکھاکہ نہ جانے بطور قوم ہم کہاں جا رہے ہیں۔

پولیس نے معاملے کی ایف آئی آر درج کرکے تفتیش کا آغاز کردیا ہے۔

سمیع اللہ نے 1976 کے مانٹریال اولمپکس سے 1982 تک انٹرنیشنل ہاکی ٹورنامنٹس کے متعدد مقابلوں میں پاکستان کی نمائندگی کرتے ہوئے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا، حکومت پاکستان نے انہیں 14 اگست 1983 کو صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی سے نوازا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube