سونےچاندی کاجادوہردورمیں سرچڑھ کربولا

SAMAA | - Posted: Feb 17, 2021 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 17, 2021 | Last Updated: 4 months ago

عورت و مرد کی نظرمیں انکی افادیت ہمیشہ سےقائم

سونے اور چاندی جیسی قیمتی دھاتیں ہر دور میں زیبائش و آرائش کیلئے خواتین کی من بھاتی رہی ہیں۔مرد بھی اکثرچاندی کی انگوٹھیاں اور ہاتھوں میں کڑے پہنے دکھائی دیتے ہیں۔

زمانےبدلتے رہے لیکن سونے اور چاندی کی اہمیت کم نہ ہوئی۔کڑے اورانگوٹھیاں کل بھی ہر دلعزیزتھیں اورآج بھی مقبول عام ہیں۔ دھاتوں پر زمانہ قدیم کی بے مثال نقش و نگاری کئی رازوں کی امین ہے۔مردوں کے سونا پہننے پر شریعت میں حدود و قیود طے ہیں۔

ٹیکسیلا میوزیم کےکیوریٹردلناصر نےبتایا کہ اس مقام سےسینکڑوں انگوٹھیاں ایسی ملی ہیں جن پر بادشاہوں کے نام لکھے ہوئے ہیں اور وہ بطور سیل یا مہر استعمال ہوتی تھی۔زمانہ قدیم کی نوادرات میں کڑے اور انگوٹھیوں پر یہ نقش و نگار آج بھی اپنے آپ میں کئی راز چھپائے ہوئے ہیں۔

دوسری اورچھٹی صدی عیسوی کے یہ نوادرات دیکھ کر معلوم ہوتا ہے کہ زمانہ قدیم میں چاندی پر کشیدہ کاری سے پہچان، پیغام رسانی اور زیبائش عام تھی۔قدیم  مجسموں پرغور کریں توبدھا، ہندودیوتاؤں اور رومی اور کُشان دور کے امرا سب کی کلائیوں میں کڑے دکھائی دیتے ہیں۔دور قدیم کے باوجوددھاتوں پر نقش و نگار کی مہارت ایسی لاجواب تھی کہ جودیکھتا ہےوہ حیرت میں ڈوب جاتا ہے۔

اسلام آباد میں بری امام مزار کے باہرتقریباً ہر دکان پر چاندی کے سادہ اور نگینے جڑے کڑے، انگوٹھیاں اور مختلف تعویزات بھی موجود ہیں۔

مدرسہ ربانیہ کے مولانا محمد شریف ہزاروی نے بتایا ہے کہ حضرت محمد مصطفی ﷺ نے چار ماشے کی چاندی کی انگوٹھی پہنی تھی جو اُن کی مہر تھی اورجس پراللہ رسول محمد لکھا ہوا تھا اور یہ بعد میں مختلف خلفا کے زیراستعمال رہی۔

مائنڈ سائنسزاور پیراسائیکولوجی کے ماہرین کا کہنا ہے کہ دھاتوں کے استعمال سے انسانی جسم کےگرد الیکڑو میگنیٹک ویوز کے بہاؤ میں رکاوٹیں دور ہونے کی بات سامنے آتی ہے۔

دنیا پتھر کے زمانے سے ڈیجیٹل دور تک کا سفر طے کرچکی لیکن حقیقت یہی ہے کہ دور کوئی بھی ہو اور تاویلیں کچھ بھی ہوں،سونا چاندی کی مانگ ، اہمیت اور افادیت نہ کبھی کم ہوئی اور شائد نہ کبھی ہوگی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube