Friday, January 15, 2021  | 30 Jamadilawal, 1442
ہوم   > فیشن ، لائف اسٹائل

نصیرترابی نے”وہ ہمسفرتھا”کس کیلئے لکھی تھی؟

SAMAA | - Posted: Jan 11, 2021 | Last Updated: 4 days ago
SAMAA |
Posted: Jan 11, 2021 | Last Updated: 4 days ago

تصویر: یوٹیوب

معروف شاعر و ادیب ، ماہر لسانیات اورلغت نویس نصیر ترابی گزشتہ روزعلالت کے باعث کراچی میں انتقال کر گئے۔

ان کے کریڈٹ پر بے انتہا مقبول غزل ” وہ ہمسفرتھا مگراس سے ہمنوائی نہ تھی” بھی ہے اورشاید بہت سے لوگوں کے علم میں نہ ہو کہ نصیرترابی کیلئےدلوں کو چھوجانے والے مصرعے لکھنے کا محرک مشرقی پاکستان کی علیحدگی بنی۔

ڈرامہ سیریل ” ہمسفر” کا ٹائٹل بنائی جانے والی اس غزل کوقرۃ العین بلوچ کی آوازمیں بے پناہ مقبولیت حاصل ہوئی۔

نصیرترابی کی ایک یادگارویڈیوسوشل میڈیا پرخوب وائرل ہے جس میں وہ یہ غزل لکھنے کی وجہ بتاتے ہوئے کہہ رہے ہیں ” سقوط ڈھاکہ کی اطلاع دوپہر 11 بجے مجھے اپنے دفترمیں ملی، سنتے ہی میں میرے میرے رونگٹے کھڑے ہوگئے اورآنسوبہنے لگے کیونکہ پاکستان کیلئے یہ بہت جذباتی مسئلہ تھا۔ بس پھرمیں نے یہ غزل لکھ دی” ۔

پندرہ جون 1945کوحیدرآباد دکن میں پیداہونے والے نصیر ترابی نامور خطیب علامہ رشید ترابی کے فرزند تھے۔ تقسیم ہند کے بعد خاندان نے پاکستان ہجرت کی، انہوں نے 1962 میں جامعہ کراچی سے ایم اے ابلاغ عامہ کیا۔

وہ پاکستان رائٹرگلڈ کے ایگزیکٹیو ممبر، سینڈیکیٹ جامعہ کراچی اور ایریا اسٹڈی سینٹریورپ کے ممبر بورڈ آف گورنر سمیت کئی کلیدی عہدوں پرفائزرہے۔ ان کی شاعری کا پہلا مجموعہ ”عکس فریادی” سال 1971 میں شائع ہوا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube