Friday, January 15, 2021  | 30 Jamadilawal, 1442
ہوم   > فیشن ، لائف اسٹائل

سردیوں میں ایک دوسرےکو چھونے سے کرنٹ کیوں لگتا ہے؟

SAMAA | - Posted: Jan 9, 2021 | Last Updated: 6 days ago
SAMAA |
Posted: Jan 9, 2021 | Last Updated: 6 days ago

آپ نے سردیوں میں اکثر محسوس کیا ہوگا کہ دھاتی اشیا کو ہاتھ لگاتے ہوئے کبھی کبھار ہلکا سا جھٹکا لگتا ہے، بعض اوقات تو ایسا بھی ہوتا ہے کہ کسی سے ہاتھ ملانے یا چھونے سے تو دونوں افراد کو ہی شاک لگ جاتا ہے۔

آپ کے ساتھ بھی کبھی ایسا ہوا کہ سر سے ٹوپی اتاری اور بال کھڑے ہوگئے، جیکٹ اتار کر کسی سے ہاتھ ملایا ہو اور کرنٹ کا زوردار جھٹکا لگا، کارپٹ پہ ننگے پائوں چل کر گئے ہوں اور دروازے کے دھاتی ہینڈل کو ہاتھ لگایا اور آپ کو ایک شاک سا لگا، کار کا دروازہ کھولنے کی کوشش کی اور کرنٹ لگا۔ اگر ہاں تو بس ایسے ہی تمام جھٹکوں کو اسٹیٹک شاک کہتے ہیں۔

ایک رپورٹ کے مطابق اصل میں جب دو مختلف قسم کے مادے ایک دوسرے کے ساتھ رگڑ کھائیں یا ملیں تو ایک اپنے الیکٹرون چھوڑ کر منفی(-) چارج ہوجاتا ہے اور دوسرا مثبت(+)چارج ہوجاتا ہے۔

اب دونوں چارج شدہ مادے جب کسی مخالف چارج رکھنے والے مادے سے ملتے ہیں تو منفی چارج والے مادے سے الیکٹران چھلانگ لگا کر مثبت چارج والے مادے کی طرف جاتے ہیں، الیکٹران کی یہ چھلانگ ہمیں ایک جھٹکے کی شکل میں لگتی ہے۔

مثال کے طور پر آپ کی جیکٹ اون کی بنی ہے جو عموماً بھیڑ کی کھال سے حاصل کی جاتی ہے، جانوروں کی کھال کے بالوں میں الیکٹران چھوڑنے یا اپنانے کی صلاحیت ہوتی ہے۔

سردیوں میں لگنے والے کرنٹ

یہی وجہ ہوتی ہے کہ آپ کا جسم جیکٹ کی رگڑ کھانے سے مثبت یا منفی چارج ہوگیا اور جیسے ہی آپ نے کسی کنڈکٹر یعنی کسی دوسرے شخص کو ہاتھ لگایا جس پر چارج مختلف تھا تو الیکٹران چھلانگ لگا کر دوسری جانب منتقل ہوئے اور کرنٹ لگا۔
کار والی مثال میں بھی آپ کے کپڑے پولیسٹر ( وہ کپڑا جس میں پلاسٹک شامل ہوتا ہے) یا اون کے ہیں یا آپ نے نائیلون یا ربر کے تلے والے جوتے پہن رکھے ہیں جس کی وجہ سے آپ کے جسم میں چارج پیدا ہوجاتا ہے۔
بعض اوقات جسم اگر کافی دیر کسی چیز (کپڑوں وغیرہ) کی رگڑ سے چارج ہوتا رہے اور اپنے برابر ہی مخالف چارج کی زد میں آجائے تو انتہائی زبردست جھٹکا لگ سکتا ہے جو دل کو بھی بند کر سکتا ہے۔
پولیسٹر یا اونی کپڑے چارج کی وجہ سے اکثر چمٹ جاتے ہیں اور علیحدہ کرنے پر ایک ہلکا سا اسپارک پیدا کرتے ہیں۔

اسٹیٹک شاک کے چند کھیل

آپ اسٹیٹک شاک کے چند کھیل بھی کھیل سکتے ہیں اور بچوں کو بھی سکھا سکتے ہیں۔

ایک پلاسٹک کا ہینگر یا چھڑی، ایک اونی یا پولیسٹر کا کپڑا اور ایک شاپر کا چھوٹا سا ٹکرا لیں اور چھڑی کو کپڑے سے خوب ایک منٹ تک رگڑیں اور اس کے بعد شاپر کو اوپر اچھال کر اس کے نیچے لائیں یا گھمائیں آپ دیکھیں گے کہ شاپر کا ٹکرا اوپر کی طرف جائے گا۔

اس کے علاوہ ایک خالی سو ڈا کین، کپڑا اور پلاسٹک کی چھڑی لیں اور چھڑی کو کپڑے سے رگڑ کر چارج کر لیں کین کو ایک سیدھی سطح پر رکھیں اور اس کے پاس کپڑا رکھ دیں لیکن ایسے کہ کپڑا کین کو نہ چھوئے، اب چھڑی کین کے اوپر گھمائیں تو آپ دیکھیں گے کہ کین گھومنے لگے گا۔

سر کے خشک بالوں کو اونی کپڑے سے رگڑیں، وہ کھڑے ہوجائیں گے اب اسی اونی کپڑے کو کاغذ کے چھوٹے ٹکڑوں کے پاس لے کر جائیں۔ اس عمل سے کاغذ کے ٹکڑے اس کپڑے پر چپک جائیں گے۔

ایک اور کھیل یہ ہوسکتا ہے کہ ایک غبارہ لیں اور اسے اپنے کپڑوں یا سر کے بالوں سے رگڑیں اورغبارے کو کسی دیوار کے پاس لے جائیں اس طرح وہ غبارہ دیوار سے چمٹ جائے گا۔

پیسی ہوئی کالی مرچ اور نمک کا مکسچر لیں پھر ایک پلاسٹک کا چمچہ لیں اور اسے کپڑے سے چارج کرلیں۔ اب اسے مکسچر کے قریب لائیں کالی مرچ الگ ہوکر ساتھ چمٹنا شروع ہوجائے گی۔

چارج شدہ پلاسٹک کی چھڑی کو ہموار بہتے پانی کے نل کے قریب لائیں آپ دیکھیں گے پانی پیچھے ہٹے گا۔

اسٹیٹک شاک گرمیوں میں بہت ہی کم لگتے ہیں جس کی وجہ یہ ہے کہ گرمیوں می ہوا میں نمی بہت زیادہ ہوتی ہے اور اس کے باعث جسم سے چارج بتدریج ہوا میں منتقل ہوتے رہتے ہیں۔ جبکہ سردیوں میں ہوا خشک ہونے کی وجہ سے یہ جسم پر ہی جمع رہتے ہیں اور بالآخر کسی چیز کو چھو کر جھٹکے کی شکل میں نکلتے ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube