Wednesday, December 2, 2020  | 15 Rabiulakhir, 1442
ہوم   > فیشن ، لائف اسٹائل

جدہ کے مشہور قدیم مکانات عالمی ورثہ قرار

SAMAA | - Posted: Nov 22, 2020 | Last Updated: 1 week ago
SAMAA |
Posted: Nov 22, 2020 | Last Updated: 1 week ago

فوٹو: اخبار 24

جدہ کے مشہور ترین تاریخی مکانات نے عالمی ورثے کی حیثیت حاصل کرلی۔

اردو نیوز کی رپورٹ کے مطابق البلد کے علاقے میں واقع مکانات والا علاقہ جدہ تاریخیہ کہلاتا ہے، جسے یونیسکو  نے عالمی ورثے کی فہرست میں شامل کرلیا، یہ علاقہ ایک مربع کلو میٹر پر پھیلا  ہوا ہے اور یہاں 400 سے زیادہ تاریخی مکانات ہیں، جن میں سے بعض 400 برس سے بھی زیادہ پرانے ہیں۔

نصیف ہاؤس: یہ جدہ کا مشہور ترین گھر ہے، جسے 145 برس قبل 900 مربع میٹر  کے رقبے پر قائم کیا گیا تھا، یہاں شاہ عبدالعزیز  نے 10 برس تک قیام کیا، یہ فن تعمیر کا خوبصورت شاہکار ہے۔ چار منزلہ گھر 40 کمروں پر مشتمل ہے، جدہ کے تاریخی علاقے کی سیر اس کے بغیر مکمل نہیں ہوتی۔

باعشن ہاؤس:  شیخ محمد صالح باعشن نے 1273ھ میں تعمیر کرایا تھا اور یہ اپنے دور میں علوم و ثقافت کا مینارہ تھا۔ یہاں ثقافتی و علمی پروگرام منعقد ہوتے، یہ عمدہ (چوہدری) کا صدر دفتر بھی تھا، اس کے دو حصے ہیں، دونوں قدیم ورثے، قلمی نسخوں اور نوادر کا خزانہ ہیں۔

المتبولی ہاؤس: چار سو برس قبل قائم کیا گیا یہ گھر حجازی فن تعمیر کے حوالے سے جدہ کا مثالی گھر ہے۔ یونیسکو کا وفد اسے دیکھ کر ششدر رہ گیا تھا۔ چار منزلہ گھر کے دو دروازے ہیں۔ حال ہی میں متبولی کی اولاد نے اس کی تزین و آرائش کرائی ہے۔

سلوم ہاؤس: یہ المظلوم محلے میں واقع ہے، جسے 1301ھ میں تعمیر کیا گیا تھا۔ اس کا رقبہ 497 مربع میٹر ہے، چار منزلہ گھر بیٹھک پر مشتمل ہے، یہ قدیم گھریلو نوادر  کے خزانے اپنے اندر سموئے ہوئے ہے، اس میں روایتی گل بوٹے بنے ہوئے ہیں، اب یہ عجائب گھر میں تبدیل ہوگیا ہے، سیاح اسے دیکھنے کیلئے آتے ہیں۔

نور ولی ہاؤس: یہ جدہ کا خوبصورت ترین تاریخی گھر ہے، جدہ کے تاریخی علاقے کا قدیم ترین مانا جاتا ہے، یہ 150 برس سے کہیں زیادہ پرانا ہے، اس کے روشندان اور لکڑی کی بیرونی کھڑکیاں اب تک اپنی رونق اور اپنے رنگ کی رعنائی برقرار رکھے ہوئے ہیں۔ نور ولی سے قبل اس کے مالک عاشور تھے۔ یہ گھر بھی چار منزلہ ہے اور پندرہ بڑے کمروں پر مشتمل ہے۔

الشربتلی ہاؤس:  الشربتلی ہاؤس جدہ کے قدیم گھروں میں سے ایک ہے۔ یہ شہر کی اہم تاریخ کا گواہ ہے۔ یہاں 20 برس تک مصر کا سفارتی مشن سکونت پذیر رہا۔ حال ہی میں اس کی مرمت کی گئی ہے۔ الشریف عبدالالہ مھنا العبدلی نے اسے 1335ھ میں بنوایا تھا۔ شیخ عبداللہ الشربتلی نے اسے ان سے خرید لیا تھا۔

باناجہ ہاؤس: یہ مشہور ترین تاریخی گھروں میں سے ایک ہے، شاہ عبدالعزیز اس میں اپنی بیٹھک کیا کرتے تھے۔ مقامی شہری اور غیرملکی وفود یہاں ان سے ملنے کیلئے آیا کرتے تھے، یہ گھر اہم ریاستی فیصلوں کا شاہد ہے۔ اس کے پڑوس میں مسجد الحنفی واقع ہے، یہ جدہ کی ان تاریخی مساجد میں سے ایک ہے جہاں بانی مملکت نماز پڑھ چکے ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube