ہوم   > فیشن ، لائف اسٹائل

کرونامریضوں سےمتعلق پھیلائی گئی تشویشناک خبرکی حقیقت کیا؟

SAMAA | - Posted: Mar 27, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Mar 27, 2020 | Last Updated: 2 months ago

 سوشل میڈیا پرپاکستان ریڈ کریسنٹ کے لوگو کے ساتھ کرونا وائرس سے متاثرہ مریضوں سے متعلق بعض اطلاعات پھیلائی جارہی ہیں جن کے حوالے سے عوام میں انتہائی تشویش پائی جاتی ہے۔

ہلال احمر پاکستان کے نام سے منسوب کیے جانے والے اس جھوٹے اعلامیے میں کہا گیا ہے بچوں سمیت گھر کے کسی بھی فرد کا کرونا ٹیسٹ مثبت آنے کی صورت میں انہیں محکمہ صحت کا عملہ ساتھ لے جائے گا، ایسے مریضوں کو تنہا رکھا جائے گا اور ملاقات کی اجازت بھی نہیں ہوگی۔

سادہ لوح افراد کا دل دہلانے کیلئے یہ تک لکھ دیا گیا کہ ایسے مریض تندرست نہ ہوئے تو گھر والے انہیں کبھی بھی نہیں دیکھ پائیں گے کیونکہ تجہیزوتکفین کی اجازت نہیں ہوگی، اہل خانہ کو فوتگی کی اطلاع دینے کے بعد محکمہ صحت میت خود دفن کرے گا۔

حقیقت کیا ہے؟

اس اعلامیے کے سوشل میڈیا پرگردش کرنے کے بعد ہلال احمر کی جانب سے تردیدی بیان جاری کیا گیا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ سوشل میڈیا پر ہلال احمر کا لوگو استعمال کرکے کرونا سے متعلق پھیلائی جانے والی اطلاعات سے ادارے کا کوئی تعلق نہیں۔ غلط معلومات پھیلانے پر وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے ) کو مطلع کردیا گیا ہے۔

ہلال احمرکی جانب سے مزید کہا گیا ہے کہ ایسی کسی بھی اطلاع کی صورت میں عوام دیے گئے نمبر پررابطہ کر کے پہلے خود تصدیق کرلیں، اس حوالے سے ای میل بھی کی جاسکتی ہے۔

سماء ڈیجیٹل کی جانب سے رابطہ کرنے پر

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube