ہوم   > فیشن ، لائف اسٹائل

کروناوائرس:سماءکےپروگرام میں ریمااورڈاکٹرطارق کی معلوماتی گفتگو

SAMAA | - Posted: Mar 26, 2020 | Last Updated: 2 weeks ago
SAMAA |
Posted: Mar 26, 2020 | Last Updated: 2 weeks ago

اداکارہ نے محفوظ رہنے کیلئے دیسی ٹوٹکے بتادیے

سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں شریک اداکارہ ریما اور ان کے شوہر ڈاکٹر طارق نے کرونا وائرس سے متعلق احتیاطی تدابیر کے حوالے سے بات کرتے ہوئے دیسی ٹوٹکے بھی بتائے جو عام نزلہ زکام، کھانسی اور گلا خراب ہونے کی صورت میں نہایت مفید ہیں۔

ریما نے اس بات پرزور دیا کہ ہمیں احتیاطی تدابیر پر ذمہ داری سے عمل کرنا چاہیے تاکہ اپنے ساتھ ساتھ دوسروں کیلئے بھی آسانیاں پیدا کرسکیں۔ کرونا وائرس سے آگہی بہت اہم ہے، ذرا سی بےاحتیاطی سب کیلئے خطرے کا باعث بن سکتی ہے۔ اپنے عزیزواقارب، دوستوں، محلے والوں کو بتائیں کہ ذرا سی احتیاط میں سب کا فائدہ ہے۔جن ممالک نے احتیاط سے کام لیا وہ اس وبا سے بچ گئے۔

ریما نے دیسی ٹوٹکوں کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ میں ہمیشہ سے اپنی نانی کے آزمودہ ٹوٹکے استعمال کرتی آئی ہوں لیکن وہ چیزیں استعمال کریں جن کا کوئی نقصان نہ ہو، خود ڈاکٹرنہ بنیں۔ لوگ سوشل میڈیادیکھ کر خود سے ادویات لے لیتے ہیں جو کہ خطرناک بات ہے ۔ زکام، کھانسی یا گلا خراب ہونا عام سی بات ہے۔

اداکارہ نے اپنی روٹین بتاتے ہوئے کہا کہ نہار منہ نیم گرم پانی کے ایک یا دو گلاس پیئیں۔ ہلدی اور شہد کا استعمال بھی بہت اہم ہے۔ میں دن میں 2 سے 3 مرتبہ نیم گرم پانی سے غرارے کرتی ہوں ، خاص طور سے سوتے وقت۔ موجودہ حالات میں ٹھنڈی اشیاء اور مشروبات سے مکمل پرہیز کریں کیونکہ گلے کی خرابی کی صورت میں آپ کا مدافعتی نظام کمزور پڑ جاتا ہے اوروائرس آپ پرفورا حملہ آور ہوتا ہے۔

ریما نے کہا کہ وٹامن سی کا استعمال لازمی رکھیں، جن سبزیوں یا پھلوں میں یہ پایا جاتا ہے وہ ضرورکھائیں۔ اس کے علاوہ ورزش کو بھی اپنا معمول بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے اداکارہ نے واضح کیا کہ کبھی بھی افرا تفری کا شکار نہ ہوں۔یہ عام تدابیرہمیں نہ صرف کرونا بلکہ دیگروائرس سے بھی بچاسکتی ہیں اوراس سے لائف اسٹائل بھی بہترہوسکتا ہے۔

ریما کے شوہر ڈاکٹر طارق جارج واشنگٹن یونیورسٹی میں پروفیسرآف میڈیسن ہیں۔ انہوں نے کرونا کے حوالے سے احتیاطی تدابیر بتاتے ہوئے کہا کہ نجی محفلوں کے انعقاد سے گریزکریں، وائرس سے متاثرہ کوئی ایک شخص بھی سب کیلئے خطرے کا باعث بن سکتا ہے۔

ڈاکٹر طارق کے مطابق کوئی بھی شخص دن میں 90 سے 100 بارغیر ارادی طور پر منہ یا آنکھوں کو چھوتا ہے، ہاتھ پروائرس لگنے کی صورت میں اس بات کا بہت زیادہ احتمال ہے کہ آپ اسے چھوئیں گے۔ یہ وائرس اسٹیل ،پلاسٹک، وغیرہ پرتقریبا 4 گھنٹے رہتا ہے۔ اس لیے بہت زیادہ چانسز ہیں کہ ہاتھ جہاں جہاں لگے گا وائرس منتقل ہوگا۔ کارڈ بورڈ پر یہ وائرس 24 گھنٹے تک بھی رہ سکتا ہے۔

دیسی ٹوٹکوں کے حوالے سے متعلق سوال پرڈاکٹرطارق نے کہا اس وائرس کا کوئی علاج نہیں ہے، سب سے اچھی چیز احتیاط ہے لیکن اس حوالے سے افراتفری کا شکارنہ ہوں، دیگر وائرس اور نزلہ زکام کی طرح کرونا میں بھی قدرتی اشیاء کااستعمال کیا جاسکتا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube