ہوم   > فیشن ، لائف اسٹائل

طارق فتح کےطنزپرایک بارپھرمہوش حیات کا کراراجواب

SAMAA | - Posted: Jan 17, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Jan 17, 2020 | Last Updated: 1 month ago

پاکستانی نژاد کینڈین صحافی اور مصنف طارق فتح نے حال ہی میں پولیو ورکرز کے حوالے سے ایک غلط ویڈیو شیئر کی تھی جس پراداکارہ مہوش حیات نے واضح کیاتھا کہ یہ ویڈیو درحقیقت ان کی گلم ’’لوڈ ویڈنگ ‘‘ کا ایک منظر ہے۔

سوشل میڈیا پر تنقید کے بعد گو کہ طارق فتح نے وہ ٹویٹ ڈیلیٹ کردی تھی تاہم اب انہوں نے نیویارک ٹائمز کی ایک رپورٹ شیئر کرتے ہوئے مہوش حیات کو ٹوئٹر پوسٹ میں ٹیگ کیا ہے۔

طارق فتح جو پاکستان کیخلاف ہرزہ سرائی کے باعث اکثر ہی خبروں کی زد میں رہتے ہیں، ویڈیو شیئر کرتے ہوئے لکھا تھا کہ ایک پاکستانی خاتون اپنے بچوں کو پولیو کے قطرے پلانے کیلئے آنے والی خواتین پر چیخنے چلانے کے بعد دھڑ سے دروازہ بند کردیتی ہیں۔

طارق فتح کی یہ ٹویٹ اداکارہ مہوش حیات تک بھی پہنچی جنہوں نے واضح کیا کہ یہ ویڈیو نہیں بلکہ ان کی فلم لوڈ ویڈنگ کا ’’فلمی منظر‘‘ تھا اور پولیو ورکرکوئی اور نہیں خود مہوش حیات ہیں ۔ مہوش حیات نے طارق فتح کو آئندہ کوئی بھی ویڈیو پوسٹ کرنے سے پہلے اس کی تصدیق کر لینے کی ہدایت کے علاوہ یہ بھی واضح کیا کہ اس فلم کے ذریعے ہم اس مسئلے سے متعلق آگہی پیدا کررہے تھے ، یہ دیکھ کرخوشی ہوئی کہ ہماری پرفارمنس قائل کرنے والی ہے۔

حالیہ ٹویٹ میں طارق فتح نے امریکی اخبار کی رپورٹ شیئر کرتے ہوئے مہوش کیلئے طنزیہ طور پر لکھا کہ میں حیرت سے سوچ رہا ہوں کیا یہ رپورٹ بھی جھوٹی ہے، کیونکہ یہ بھی اس فلم پر مبنی ہے جس میں آپ نمایاں تھیں۔

اس طنز پر مہوش حیات نے جواب میں لکھا ’’میں نے کبھی اس بات سے انکار نہیں کیا کہ پولیو ہمارے ملک کا مسئلہ ہے۔ ایک اداکارہ ہونے کے ناطے میرا کام لوگوں کو شعور اور آگاہی دینا ہے ،اور یہی کام ہم نے فلم کے ذریعے کیا۔ یہ کہتے ہوئے خوشی ہو رہی ہے کہ ہم 3 کروڑ 70 لاکھ میں سے 3کروڑ 50 لاکھ بچوں کو پولیو سے محفوظ بنا چکے ہیں اور بقیہ ٹارگٹ بھی جلد حاصل کرلیں گے۔ آپ کی فکرمندی کا شکریہ‘‘۔

اس سے قبل طارق فتح کی جانب سے شیئر کی جانے والی ویڈیو کا منظر بھلے سے فلم ’’لوڈ ویڈنگ ‘‘ کا تھا لیکن اس میں بولے جانے والے ڈائیلاگز کچھ سنے سنائے لگے۔ یہ مکالمے دراصل 2016 میں وائرل ہونے والی ایک حقیقی ویڈیو سے لیے گئے جس میں کراچی کی رہائشی ایک خاتون پولیو ورکرزکو ڈانٹتے ہوئے غصے میں کھری کھری سناتی ہیں۔

فلم بنانے والوں نے خاتون کی جانب سے بولے گئے تمام جملے معمولی سی ترمیم کے ساتھ اپنے اسکرپٹ کی زینت بنائے۔

رہے طارق فتح تو ُان کی پاکستان اور مسلمانوں کے حوالے سے نفرت انگیزی کی ایک پرانی تاریخ ہے، اور یہ پہلا موقع نہیں کہ انہیں غلط معلومات پھیلانے کے حوالے سے شرمندہ کیا گیا ہو۔

اس سے قبل ورلڈ کپ 2019 کے دوران طارق فتح نے چیف سلیکٹرانضمام الحق کی داڑھی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ایک ٹویٹ میں لکھا تھا کہ اپنا مذاق صرف پاکستان ہی بنوا سکتا ہے، پاکستانی کپتان سرفراز احمد بھارت کے خلاف اہم میچ سے قبل اچھی پِچ کیلئے ایک ملا کو ساتھ لے آئے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube