ہوم   > فیشن ، لائف اسٹائل

ہم ایوارڈز:فیشن کی دوڑمیں کون آگے،کون پیچھے؟

SAMAA | - Posted: Oct 7, 2019 | Last Updated: 6 months ago
SAMAA |
Posted: Oct 7, 2019 | Last Updated: 6 months ago

شوبزستاروں کی خواہش ہوتی ہے کہ کسی بھی ریڈ کارپٹ کیلئے وہ سب سے اچھے نظرآئیں، جس کیلئے بہترین لباس، میک اپ، اسٹائلنگ ہرچیزکو مدنظررکھاجاتا ہے۔

امریکی شہرمیں ہفتہ 5 اکتوبر کو سجنے والی ساتویں ’’ہم ایوارڈز‘‘ کی تقریب کے ریڈ کارپٹ پر پاکستان کے معروف اداکارموجود تھے لیکن بیشتر اداکاراؤں کے لباس تقریب کی مناسبت سے جچے نہیں یا پھر ان کا اسٹائل پھیکا رہا جبکہ کچھ چہرے ہر لحاظ سے موزو ں لگے۔

کون سی اداکارہ کا پہناوا کیسا رہا؟ جائزہ لیتے ہیں۔

 

لکس اسٹائل ایوارڈز میں ممکنہ طور پر اپنی آن اسکرین منگنی کے باعث اقراء اور یاسر کی تیاری اگر ’’ذرا ہٹ کر تھی‘‘ تو نہ جانے کیوں ہم ایوارڈز کیلئے اس کوشش کا 50 فیصد بھی نظر نہیں آیا۔ اقراء عزیز کا منتخب کردہ رنگ ہی فیشن کی دوڑ سے آؤٹ لگ رہا تھا جبکہ سونے پر سہاگا ان کی ہلکے سبز رنگ کی میکسی پر سلمیٰ ستاروں کی صورت نظرآیا۔ گہرے میک اپ اور روایتی ہیئراسٹائل نے دوسری اداکاراؤں کے سامنے اقراء کی دال گلنے نہ دی۔

 

سبزرنگ کا انتخاب کرنے والی اقراء اکیلی نہ تھیں، اس دوڑ میں ماورہ حسین بھی اسی کشتی کی سوارنکلیں۔ گو ان کا لہنگا تھوڑا گہرے شیڈ میں تھا لیکن کسی بڑی عمر کی خاتون کاسا انداز اپنائے ماہرہ بھی متاثر کرنے میں خاص کامیاب نظر نہیں آئیں، البتہ ماورہ کا چاند کلچ ذرا ہٹ کے تھا۔

 

دو سبز لباس مسترد کرنے کے بعدہمارا اگلا انتخاب اداکار نعمان جاوید کی اہلیہ ٹھہریں کیونکہ وہ بھی ’’گرین کلب ‘‘ میں شامل تھیں لیکن ان کی چوائس کی داد دینی پڑے گی، ایمرلڈ گرین میں سادہ لباس کی مناسبت سے جیولری اور ہیئراسٹائلنگ سمیت سب پرفیکٹ تھا، البتہ ان کا پرس کسی اسٹائلش کلچ سے تبدیل کیاجاسکتا تھا۔

 

اداکارہ عروہ حسین اورفرحان سعید نے میچنگ کرنے کی اچھی کوشش کی۔ عروہ کی وائٹ اینڈ گولڈ میکسی بہترتھی لیکن اسٹائلنگ ان کی سگنیچر لک کہی جاسکتی ہے۔ تھوڑی سی توجہ میک اپ اور بالوں پردینے سےعروہ مزید بہترلگ سکتی تھیں۔

 

عائشہ عمرکی فِرل والی میکسی ’’سپراسٹار‘‘ میں ماہرہ خان کے اپنائے گئے اندازسے متاثرلگی۔ لال رنگ کا انتخاب کم سے کم کسی ایوارڈ کی تقریب کیلئے ہرگز بھی اچھا نہیں تھا۔

 

سارہ خان نے ایک مشرقی لڑکی ہونے کا مکمل ثبوت دیتے ہوئے انارکلی کا سا انداز اپنایا، اچھی تو وہ ہمیشہ ہی لگتی ہیں سو اس تقریب میں بھی لگیں  لیکن ڈیزائننگ تھوڑی اور بہتر ہوسکتی تھی۔

 

صنم جنگ کا سلور اور پرپل گاؤن  گلیمرس لک کیلئے اچھی چوائس کہلائی جاسکتی ہے۔ لیکن میزبانی کیلئے ان کا منتخب کردہ دوسرا لباس ایک گاؤن تھا جس میں صنم خاص نہیں جچیں، بہرحال ان کی اسٹائلنگ اچھی تھی۔

 

ہانیہ عامر نے سب سے منفردنظر آنے کیلئے ساڑھی کاانتخاب کیا لیکن وہ ایک بات بھول گئیں، نیچرل بیوٹی تو وہ ہیں ہی، کیا ہی اچھا ہوتا اگریہ چنگھاڑتا رنگ پہن کراپنی عمر سے قدرے بڑا لگنے کے بجائے وہ کوئی ہلکا رنگ منتخب کرتیں۔ سونے پرسہاگا اس ساڑھی کی بےتحاشا چمک دمک انہیں 60 کی دہائی کی ہیروئن ظاہرکر رہی تھی جو فلم کی شوٹنگ کیلئے بالکل تیار ہو۔

 

یمنیٰ زیدی اس تقریب میں چھائی رہیں۔ ان کی تیاری کی خاص بات لباس اچھا ہونے کے علاوہ بہترین ہیئراسٹائل اور جیولری کاانتخاب تھا۔

 

کنزیٰ ہاشمی نے رنگ تو خوب چنا لیکن بازوؤں کا یہ انداز اسٹائل کم اور جنجال زیادہ لگا۔

 

اداکارہ ہاجرہ یامین کا یہ فنکی سا لہنگا تقریب کی مناسبت سے بہت اچھا تھا اور ساتھ ہی ان کو اسٹائلنگ کے بھی پورے نمبر دیے جاسکتے ہیں۔

 

کبریٰ خان نہ جانے کیوں وہ رنگ نہ جما سکیں جس کی ان سے توقع کی جارہی تھی۔ ان کی اسٹائلنگ مناسب تھی لیکن لباس کی ایمبرائیڈری کسی مہنگے برانڈ کا سستا ریپلکا لگ رہی تھی۔

 

اداکارہ ریما خان کا انداز ہمیشہ کی طرح قدرے سادہ اور متاثر کن تھا۔ ان کی سفید میکسی خوب جچی۔

ہوسکتا ہے کہ آپ میں سے بہت سوں کو اس رائے سے اختلاف بھی ہو لیکن ہم یہ کہیں گے کہ اختلاف آپ کا جمہوری حق ہے، ضرور کیجئے لیکن بس ذرا یہ ذہن میں رکھ لیجئے گا کہ سیانے کہہ گئے ہیں کہ ’’ پہنو جگ بھاتا اور کھاؤ من بھاتا‘‘ توجب ہمارے شوبز ستارے اپنی تیاری پر اتنی بھاری رقم خرچ کر ہی رہے ہوتے ہیں تو یہ بھی سوچ لیا کریں کہ لباس وہی جو آپ پر جچے اور جسے پہن کر لگے کہ ہاں یہ آپ کیلئے ہی بنا تھا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube