اقبال کا پاکستان ان کے فلسفے سے مختلف نہ تھا

November 9, 2017

لاہور: اقبال کیسا پاکستان چاہتے تھے اس پر یوں تو ہر کوئی اپنی رائے رکھتا ہے لیکن ان کے نواسے یوسف صلاح الدین کہتے ہیں کہ اقبال کا پاکستان ان کے فلسفے سے مختلف نہ تھا۔

شاعرمشرق علامہ محمد اقبال کا کلام نوجوانوں، بچوں، بڑوںہر ایک کے لیے مشعل راہ ہے۔

علامہ نے جولکھا وہ پتھر پر لکیر ثابت ہوا۔چاہے بانگ درا کی مشہور "نظم طلوع اسلام"  ہو یا پھرمشہور بال جبریل کا کلام 'ساقی نامہ'،ہر لفظ میں ہدایت، ہر شعر میں امت مسلمہ سے محبت پوشیدہ ہے۔

نواسہء اقبال یوسف صلاح الدین کہتے ہیں کہ بچپن نانا کے قصے سنتے ہوئے گزرا اور جس پاکستان کے خواب کی تعبیر اقبال نے دیکھی تھی، آج کا پاکستان اس سے بالکل مختلف ہے ۔

یوسف صلاح الدین کا کہنا ہے کہ اقبال حقیقت میں دین اور بزرگان کے ہمیشہ خدمت گار رہے۔  سماء

Email This Post
 

:ٹیگز

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.