Friday, January 21, 2022  | 17 Jamadilakhir, 1443

میانمار: آنگ سان سوچی کو چار سال قید کی سزا

SAMAA | - Posted: Dec 6, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Dec 6, 2021 | Last Updated: 2 months ago
Myanmar Aung San

فوٹو: اے ایف پی

میانمار کی عدالت نے ملک کی سابق سربراہ آنگ سان سوچی کو فوج کے خلاف بغاوت پر اکسانے اور کوویڈ قوانین کی خلاف ورزی کرنے پر چار سال قید کی سزا سنا دی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق جنتا کے ترجمان زو من تون نے بتایا کہ آنگ سان سوچی کو دو سال قید سیکشن 505 (بی) کے تحت جبکہ دو سال قید قدرتی آفات کے قانون کے تحت سنائی گئی۔

جنتا کے ترجمان کے مطابق سابق صدر ون مائنٹ کو بھی انہی الزامات کے تحت چار سال قید کی سزا سنائی گئی۔ تاہم، انہیں ابھی جیل نہیں لے جایا گیا۔

واضح رہے کہ 76 سالہ آنگ سان سوچی اس وقت سے نظر بند ہیں جب فوج نے ان کی حکومت کو یکم فروری کے اوائل میں معزول کر دیا تھا۔

فوج کی جانب سے بنائی گئی خصوصی عدالت میں صحافیوں کو کوریج کرنے نہیں دی گئی جبکہ آنگ سان سوچی کے وکلاء پر حال ہی میں میڈیا سے بات کرنے پر پابندی عائد کر دی گئی تھی۔

مقامی مانیٹرنگ گروپ کے مطابق، فوجی کے بعد کریک ڈاؤن میں 1300 سے زیادہ افراد ہلاک جبکہ 10ہزار سے زیادہ کو گرفتار کیا گیا ہے۔

آنگ سان سوچی کے دورِ حکومت میں سال 2016 اور 2017 کے درمیان روہنگیا مسلمانوں کا قتل عام بھی کیا گیا جس پر دنیا بھر کی جانب سے میانمار کی شدید مذمت کی گئی تھی۔

بعد ازاں، آنگ سان سوچی سے امن کا نوبل انعام بھی واپس لے لیا گیا تھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube