Friday, December 3, 2021  | 27 Rabiulakhir, 1443

غلطیاں کہاں ہوئیں:امریکا کا افغانستان سے انخلاء کی تحقیقات کا فیصلہ

SAMAA | - Posted: Oct 28, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Oct 28, 2021 | Last Updated: 1 month ago

امریکی وزیرِ خارجہ اینٹنی بلنکن نے افغانستان سے امریکا کی فوج کے انخلاء کے تفصیلی جائزے کا حکم دیا ہے۔

امریکی میڈیا کے مطابق بدھ کو واشنگٹن کے قریب فارن سروس انسٹیٹیوٹ میں قانون سازوں اور سفارت کاروں کے ایک گروپ سے خطاب کرتے ہوئے اینٹنی بلنکن کا کہنا تھا کہ میں نے انخلا کی منصوبہ بندی، عمل درآمد اور لوگوں کو منتقلی کے عمل کے مفصل جائزے کا حکم دیا ہے۔

بلنکن کا کہنا تھا کہ ہمیں خود سے یہ سوال کرنا چاہیے کہ کیا ہم اس سے کچھ مختلف کر سکتے تھے؟ کیا ہم فلاں اقدام اُٹھا سکتے تھے؟ کیا ہمیں کوئی فیصلہ پہلے کرنا چاہیے تھا اور کیا ہم اس فیصلے کو جلدی کر سکتے تھے؟

امریکی وزیرِ خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ اس جائزے سے محکمۂ خارجہ کے نئے ملازمین، ہمارے افغان دوست اور شراکت دار استفادہ کر سکیں گے کہ وہ کس طرح آئندہ اس طرح کی صورت حال میں بہتر منصوبہ بندی کر کے صحیح وقت پر درست فیصلہ لے سکیں گے۔

خیال رہے کہ اگست کے وسط میں طالبان کی غیر متوقع پیش قدمی اور کابل پر کنٹرول کے بعد امریکہ اور اس کے اتحادیوں کی جانب سے عجلت میں جنگ زدہ ملک سے انخلا دیکھنے میں آیا تھا۔

امریکہ اور اس کے اتحادیوں نے 15 اگست کو کابل پر طالبان کے کنٹرول اور اشرف غنی کے ملک سے جانے کے بعد لگ بھگ ایک لاکھ 24 ہزار امریکی شہریوں، افغان شہریوں اور دیگر افراد کو خصوصی پروازوں کے ذریعے ملک سے نکالا تھا۔

انخلا کے عمل کے دوران کابل ایئرپورٹ پر بدنظمی بھی دیکھنے میں آئی تھی جب سیکڑوں افغان شہری ملک سے نکلنے کے لیے رن وے پر آ گئے تھے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube