Friday, December 3, 2021  | 27 Rabiulakhir, 1443

امریکی تاریخ میں پہلی بار پاسپورٹ میں تبدیلی

SAMAA | - Posted: Oct 28, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Oct 28, 2021 | Last Updated: 1 month ago

فائل فوٹو

امریکا نے ” ایکس” کی صنفی پہچان کے ساتھ اپنا پہلا پاسپورٹ جاری کردیا ہے، جو ان لوگوں کے حقوق کو تسلیم کرنے کی جانب ایک اہم قدم ہے، جن کی شناخت مرد یا عورت نہیں ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے 27 اکتوبر بروز بدھ کو جاری کیے گئے بیان کے مطابق یہ کیٹگری ایسے افراد کیلئے ہے، جن کی صنفی شناخت مرد یا عورت کے طور پر نہیں ہوتی، انہیں بالعموم ‘ایل جی بی ٹی کیو’ کہا جاتا ہے۔ محکمے کی جانب سے فی الحال اس کیٹگری کا حامل ایک ہی پاسپورٹ جاری کیا گیا ہے۔ اس کیٹگری سے تعلق رکھنے والے افراد امریکا سمیت دیگر تمام ممالک میں زندگی کے ہر شعبے میں دوسروں کے مساوی اپنے حقوق کے لیے جدوجہد کر رہے ہیں۔

محکمے نے پاسپورٹ کے لیے درخواست دینے والوں کو عورت اور مرد سے ہٹ کر بھی اپنی صنفی شناخت کے انتخاب کی اجازت دے دی ہے اور اس کے لیے درخواست گزار کو کسی اضافی دستاویز کی بھی ضرورت نہیں ہے۔

امریکا میں ایل جی بی ٹی کیو کے حقوق کے لیے خصوصی سفارتی نمائندہ جیسکا اسٹرن نے اس اقدام کو تاریخی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ جشن منانے کا لمحہ ہے، کیونکہ سرکاری دستاویزات میں انہیں ایک زندہ حقیقت کے طور پر تسلیم کر لیا گیا ہے۔ اس اقدام سے صنفی شناخت میں توسیع ہوئی ہے اور اب عورت اور مرد کے ساتھ ساتھ انہیں بھی تسلیم شدہ پہچان مل گئی ہے۔

جیسکا اسٹرن کا کہنا تھا کہ جب کوئی شخص شناختی دستاویزات حاصل کرتا ہے جس سے اس کی حقیقی شناخت کی عکاسی ہوتی ہو تو وہ زیادہ عزت اور احترام کے ساتھ زندگی گزارتا ہے۔ ان کی جانب سے توقع ظاہر کی گئی ہے کہ اگلے سال اس صنفی پہچان کے ساتھ بہت سے پاسپورٹ جاری کیے جا سکیں گے۔

محکمہ خارجہ کی جانب سے ایکس’ کی شناخت کے ساتھ جاری ہونے والے پہلے پاسپورٹ کے متعلق یہ نہیں بتایا گیا کہ یہ پاسپورٹ کس کو جاری کیا گیا ہے۔

محکمے کے ایک عہدے دار نے یہ بتانے سے انکار کیا ہے کہ یہ پاسپورٹ کس کیلئے جاری کیا گیا ہے۔ عہدے دار کا کہنا تھا کہ محکمہ شخصی رازداری کے خدشات کے پیش نظر پاسپورٹ کی انفرادی درخواستوں کے متعلق کچھ نہیں بتاتا۔

واضح رہے کہ امریکا کے علاوہ آسٹریلیا، نیوزی لینڈ، نیپال اور کینیڈا سمیت دنیا میں صرف چند ہی ایسے ممالک ہیں، جو اپنے شہریوں کو اپنے پاسپورٹ پر مرد یا عورت کے علاوہ کوئی اور جنس درج کرنے کی اجازت دیتے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube