Friday, December 3, 2021  | 27 Rabiulakhir, 1443

انشورنش کی رقم کیلئے اپنی جھوٹی موت کاڈرامہ رچانےوالا گرفتار

SAMAA | - Posted: Oct 27, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Oct 27, 2021 | Last Updated: 1 month ago

بھارت کے ایک شخص نے کوبرا سانپ کو آلہ قتل کے طور پر استعمال کیا جس کا مقصد اپنی جھوٹی موت کا ڈرامہ رچا کر لائف انشورنس کی مد میں 50 لاکھ ڈالر ہڑپ کرنا تھا تاہم اس کا وہ منصوبہ ناکام ہوگیا۔

بھارتی ریاست مہاراشٹر کے احمد نگر ضلع میں 54 سالہ پربھاکر بھیماجی واگھچورے نے امریکا میں لائف انشورنس کی مد میں 5 ملین ڈالرز کے حصول کے لیے ایک بے سہارا شخص کو قتل کرکے اپنی موت کا منصوبہ بنایا۔

پولیس کے مطابق پربھاکر 20 سال سے امریکا میں مقیم تھے اور جنوری میں ہندوستان واپس آنے کے بعد احمد نگر ضلع کے راجور گاؤں میں رہنے لگے۔ بائیس اپریل کو احمد نگر کے راجور پولیس اسٹیشن کے اہلکاروں کو مقامی سرکاری اسپتال سے واگھچورے کی موت کے بارے میں رپورٹ موصول ہوئی۔

جب ایک پولیس کانسٹیبل اسپتال گیا تو ایک شخص جس نے خود کو واگھچورے کے بھتیجے پروین کے طور پر ظاہر کیا نے لاش کی شناخت کی۔

ابتدائی میڈیکل رپورٹ موصول ہونے کے بعد جس میں موت کی وجہ سانپ کا ڈسنا بتایا گیا تھا لاش کو آخری رسومات کے لیے بھتیجے کے حوالے کر دیا گیا۔

تاہم اس سازش سے پردہ اس وقت اٹھا جب واگھچورے کے لائف انشورنس کلیم کی تحقیقات کرنے والے انشورنس فرم کے اہلکاروں نے احمد نگر کے حکام سے اس کی موت کے بارے میں مزید معلومات حاصل کرنے کے لیے رابطہ کیا۔

انشورنس فرم نے تفتیش کے لیے ایک تفتیش کار کو بھارت بھیجا اور تحقیقات کے بعد پولیس نے گزشتہ ہفتے ملزم اور اس کے 4 ساتھیوں کو گرفتار کر لیا۔

تحقیقات کے دوران پولیس نے راجور میں واگھچورے کے گھر کا دورہ کیا جہاں اس کے  ایک پڑوسی نے بتایا کہ اس نے سانپ کے کاٹنے کے کسی واقعے کے بارے میں نہیں سنا تھا لیکن اس نے مبینہ واقعے کے وقت ایمبولینس کو گھر آتے دیکھا تھا۔

بھارتی اخبار انڈین ایکسپریس کے رپورٹ کے مطابق جب پولیس نے واگھچورے کے کال ریکارڈز کو دیکھنا شروع کیا تو انہیں معلوم ہوا کہ وہ نہ صرف زندہ تھا بلکہ اس نے اسپتال میں پروین کا روپ دھارا تھا۔ اس کے فوراً بعد واگھچورے کو حراست میں لے لیا گیا۔

احمد نگر کے ایس پی منوج پاٹل کا کہنا ہے کہ بیمہ کلیمز کے تفتیش کار نے واگھچورے کی موت کے دعوے کی تفصیلی چھان بین کی کیوں کہ ملزم نے سن 2017 میں لائف انشورنس کلیم کے لیے اپنی بیوی کی موت کا جھوٹا دعویٰ کیا تھا۔

تحقیقات کے مطابق واگھچورے اور دیگر ملزمان نے ایک منصوبہ بنایا اور ایک سنپیرے سے کوبرا خرید کر ایک بے سہارا شخص تلاش کیا جس کی شکل واگھچورے سے ملتی جلتی تھی۔ اس کے بعد ملزمان نے اسے کوبرا سے کٹواکر مار ڈالا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube