Friday, December 3, 2021  | 27 Rabiulakhir, 1443

ماسکو اجلاس:کیا روس طالبان حکومت کو تسلیم کرسکتا ہے؟

SAMAA | - Posted: Oct 20, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Oct 20, 2021 | Last Updated: 1 month ago

افغانستان کے موجودہ بحران کے حل کے لیے آج ماسکوميں اہم عالمی اجلاس ہورہا ہے جس میں روس، طالبان حکام، پاکستان، چین اور بھارت شرکت کریں گے تاہم امریکا اجلاس میں شریک نہیں ہورہا۔

ترجمان امريکی محکمہ خارجہ نيڈ پرائس کا کہنا ہے کہ کہ لاجسٹک مسائل کے سبب اس اجلاس ميں شرکت نہيں کرسکتے مگر چاہتے ہيں ماسکو اجلاس سے معاملات آگے بڑھيں۔

طالبان کی جانب سے وفد کی سربراہی نگران نائب وزیراعظم عبدالسلام حنفی کررہے ہيں جس میں وزیر خارجہ امیرخان متقی بھی شامل ہیں۔

طالبان کا کہنا ہے کہ چاہتے ہيں کہ دنيا انہيں جلد تسليم کرے اور اجلاس ميں ان کا ايجنڈا سياسی اور معاشی معاملات پرتبادلہ خيال ہے۔

روسی وزیر خارجہ سرگئی لاوروف کا کہنا ہے کہ ماسکو افغانستان میں طالبان کی حکومت کو تسلیم کرنے کا باضابطہ اعلان اس وقت تک نہیں کرے گا جب تک کہ طالبان اقتدار تک پہنچنے سے پہلے کیے گئے وعدے پورے نہیں کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں طالبان کی طرف سے حکومت سازی کے حوالے سے کیے گئے وعدوں پر عمل درآمد کا انتظار ہے۔ روس طالبان سے کہہ چکا ہے کہ وہ افغانستان میں نمائندہ حکومت کی تشکیل چاہتا ہے۔

واضح رہے کہ آج روسی دارالحکومت ماسکو میں طالبان کے ساتھ 10 ممالک کے وفود ملاقات کریں گے۔ اجلاس میں افغانستان کی صورتحال اور انسانی بحران کے ساتھ ساتھ کابل میں تمام طبقات کی نمائندہ حکومت کی تشکیل پر بات چیت بھی ایجنڈے شامل ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube