Wednesday, December 8, 2021  | 3 Jamadilawal, 1443

امریکاکا کابل ڈرون حملےمیں جانبحق افرادکے لواحقین کومعاوضہ دینےکا اعلان

SAMAA | - Posted: Oct 16, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Oct 16, 2021 | Last Updated: 2 months ago

امریکی وزارتِ دفاع کا کہنا ہے کہ وہ ان 10 افراد کے لواحقین کو معاوضہ دینے کے لیے پر عزم ہے جو رواں برس اگست میں افغانستان کے دارالحکومت کابل میں امریکی ڈرون حملے میں مارے گئے تھے۔

پینٹاگون کے ترجمان جان کربی کا جمعے کو جاری کردہ بیان میں کہنا تھا کہ وزارتِ دفاع اس حملے میں بچ جانے والے افراد کی امریکہ منتقلی کے لیے وزارتِ خارجہ کے ساتھ رابطے میں ہے۔

امریکی خبر رساں ادارے کے مطابق جان کربی کا کہنا تھا کہ یہ معاملہ رواں ہفتے جمعرات کو وزارتِ دفاع کے انڈر سیکریٹری برائے پالیسی ڈاکٹر کولن کاہل اور غیر منافع بخش تنظیم کے صدر ڈاکٹر اسٹیون کون کے درمیان ہونے والی ملاقات کے دوران اٹھایا گیا۔

جان کربی کا مزید کہنا تھا کہ ڈاکٹر کاہل نے امریکی وزیرِ دفاع لائیڈ آسٹن کو ان خاندانوں کی مدد کرنے کا اعادہ ظاہر کیا جس میں ان خاندانوں کو دیا جانے والا معاوضہ بھی شامل ہے۔

خیال رہے کہ 29 اگست کو امریکہ کے ڈورن حملے میں افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ایک کار کو نشانہ بنایا گیا تھا اس حملے میں ایک ہی خاندان کے 10 افراد ہلاک ہوئے تھے جس میں سات بچے بھی شامل تھے۔

اس حملے کے کچھ دن بعد امریکہ کی فوج کے اعلیٰ ترین افسر چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف جنرل مارک ملی نے بھی اس حملے کا دفاع کرتے ہوئے اسے درست قرار دیا تھا۔

جنرل ملی کا کہنا تھا کہ انہیں دیگر ذرائع سے بھی یہ معلوم ہوا تھا کہ اس حملے میں ہلاک ہونے والے افراد میں سے کم از کم ایک فرد داعش کا سہولت کار تھا۔

تاہم کچھ ہفتوں بعد امریکی سینٹرل کمانڈ کے سربراہ جنرل فرینک مکینزی نے اس حملے کو سنگین غلطی قرار دے کر کہا تھا کہ اس حملے میں معصوم شہری ہلاک ہوئے تھے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube