Thursday, December 2, 2021  | 26 Rabiulakhir, 1443

داعش ہمارے لیے بڑامسئلہ نہیں، جلد جڑسےصفایا کردیں گے،طالبان

SAMAA | - Posted: Oct 15, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Oct 15, 2021 | Last Updated: 2 months ago

طالبان کا کہنا ہے ہم تہیہ کر چکے ہیں کہ افغانستان سے داعش خراسان کا جلد جڑ سے صفایا کر دیں گے، یہ تنظیم ہمارے لیے کوئی بڑا مسئلہ نہیں ہے۔

وائس آف امریکا کو دیے گئے انٹرویو میں طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے کہا  ہے کہ افغانستان میں داعش کے جنگجو زیادہ تعداد میں موجود نہیں نہ ہی ان میں کوئی غیر ملکی ہے اور اس وقت صورتحال یہ ہے کہ اس کے ارکان جان بچانے کے لیے چھپتے پھر رہے ہیں۔

ذبیح اللہ مجاہد کا کہنا تھا کہ گزشتہ ایک ڈیڑھ ہفتے کے دوران طالبان نے داعش سے تعلق رکھنے والے کئی افراد گرفتار کیے ہیں اور ان کے متعدد محفوظ ٹھکانوں کو مسمار کردیا گیا ہے اور اس کے علاوہ بروقت کارروائی کے ذریعے ان کے کئی حملوں کو روکا بھی گیا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ داعش کے تمام کارندے افغان ہیں اور طالبان فوجی اس گروہ کی جڑوں تک پہنچنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان کے اثاثوں کو منجمد کرنا افغان عوام کے ساتھ زیادتی کے مترادف ہے، ہم امریکہ کے ساتھ مذاکرات کر رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم دیگر ملکوں اور بین الاقوامی بینکوں کے ساتھ بھی اس حوالے سے بات چیت کر رہے ہیں کہ یہ رقوم افغان عوام کی امانت ہیں انہیں جاری کردیا جانا چاہے۔

ذبیح اللہ مجاہد نے بتایا کہ طالبان کی جانب سے چینی کارکنان اور اثاثوں کی سیکیورٹی کی ضمانت کی شرط پر چین افغانستان میں اربوں ڈالر کی سرمایہ کاری کرنے کے لیے تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ طالبان حکومت چین کو سیکیورٹی کی ضمانت دینے کے لیے تیار ہیں۔

خواتین کی تعلیم کے معاملے پر انہوں نے بتایا کہ اس سلسلے میں طالبان ایک پالیسی وضع کر رہے ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ طالبان کا یہ مقصد نہیں کہ بچیاں اسکول نہ جائیں بلکہ ان کی تعلیم کے حوالے سے ایک جامع منصوبہ بندی کی جارہی ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube