Tuesday, October 19, 2021  | 12 Rabiulawal, 1443

چین نے کرپٹو کرنسی پر مکمل پابندی لگادی

SAMAA | - Posted: Sep 24, 2021 | Last Updated: 3 weeks ago
SAMAA |
Posted: Sep 24, 2021 | Last Updated: 3 weeks ago

چین نے کرپٹو کرنسیوں کی ہر قسم کی ٹرانزیکشن کو کالعدم قرار دیدیا۔ مرکزی بینک کا کہنا ہے کہ بیرون چین سے بھی کرپٹو کرنسیوں کی ترسیلات غیر قانونی ہوں گی۔

پیپلز بینک آف چین نے اپنی ویب سائٹ پر کرپٹو کرنسیوں کو خلافِ قانون قرار دینے کا اعلان کیا۔ اعلامیے میں واضح کیا گیا ہے کہ ملکی اقتصادی اور مالیاتی نظام میں انتشار کا باعث بننے والا کوئی بھی کاروبار یا عمل قانونی قرار نہیں دیا جاسکتا اور ایسی تمام سرگرمیاں یقینی اور فوری طور پر خلاف قانون قرار دی جاتی ہیں۔

مرکزی بینک نے خبردار کیا ہے ایسی سرگرمیوں میں شریک ہونا مجرمانہ سرگرمی تصور کی جائے گی۔ یہ بھی بتایا کہ ملکی مالیاتی نظام میں انتشار کا باعث سرگرمیوں میں قمار بازی، خلافِ ضابطہ فنڈ جمع کرنا، مالی فراڈ، رقوم پر ناجائز منافع دینے کی سرگرمیاں اور منی لانڈرنگ شامل ہیں۔

حکومت نے ایسی ناجائز مالی کارروائیاں ریاست اور عوام کی سلامتی کے منافی قرار دیا، اسی تناظر میں حکام نے ورچوئل کرنسیوں کی تجارت کو بھی ملکی قانون کے منافی خیال کیا ہے۔

چین کے فیصلے کے کرپٹو کرنسیوں پر شدید منفی اثرات مرتب ہوئے اور ڈیجیٹل کرنسی کی قیمتوں میں شدید گراوٹ دیکھی جارہی ہے۔

واضح رہے کہ چینی حکام نے رواں برس جون میں کرپٹو کرنسیوں کی خرید و فروخت کرنے والے ایک ہزار سے زائد افراد کو حراست میں لیا تھا، جس پر  الزام عائد کیا گیا کہ یہ ورچوئل کرنسیوں کی قدر میں اضافے کو دیکھتے ہوئے ان کو خریدنے کا کاروبار جاری رکھے ہوئے تھے۔

واضح رہے کہ چینی مرکزی بینک کے فیصلے سے قبل ہی کئی صوبوں نے کرپٹو کرنسیوں کے کاروبار کو خلاف قانون قرار دے رکھا ہے۔

دوسری جانب چینی حکومت نے ملکی مالیاتی اداروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ کسی قسم کی کرپٹو کرنسی میں لین دین نہ رکھیں اور ایسی کوئی کمپنی جو ایسے کاروبار میں شریک ہے، اس کے ساتھ فوری طور پر تجارتی روابط منقطع کردیئے جائیں، ساتھ ہی ایسے افراد اور کمپنیوں کو بھی ایسی سرگرمیان فوری طور پر روکنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube