Friday, October 22, 2021  | 15 Rabiulawal, 1443

فیکٹ چیک:بغیرنقاب کتاب پڑھنےوالی خاتون کی تصویرکی حقیقت

SAMAA | - Posted: Sep 23, 2021 | Last Updated: 4 weeks ago
SAMAA |
Posted: Sep 23, 2021 | Last Updated: 4 weeks ago

سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر بغیر نقاب کتاب پڑھنے والی خاتون کی تصویر کی حقیقت سامنے آگئی۔

مختلف ویب سائٹس سمیت فیس بک اور ٹویٹر پر 1400 سے زائد افراد نے دعویٰ کیا تھا کہ یہ تصویر افغان آرٹسٹ شمسیہ حسنی نے افغان طالبان کے اقتدار میں آنے کے بعد بنائی تھی تاہم حقیقت یہ ہے کہ یہ تصویر چیک میگزین کے لیے اشتہار ہے اور یہ 2018 میں جاری کی گئی تھی۔

اس تصویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ایک خاتون ہزاروں خواتین کے ہجوم میں بغیر نقاب اور برقعہ پہنے سیاہ لباس میں ہجوم سے مخالف سمت میں کتاب پڑھتے ہوئے جارہی ہے۔

جس فیس بک پوسٹ پر یہ تصویر جاری کی گئی، اس کے کیپشن میں تحریر تھا کہ یہ تصویر افغان مصورہ شمسیہ حسنی  نے تیار کی۔  شمسیہ کابل یونی ورسٹی میں ٹیچر ہیں اور بارہا ان کے آرٹ ورک کے ذریعے افغان خواتین کے روز مرہ امور سے آگاہی ہوتی ہے۔اس تصویر کو حقیقت سے برعکس کیپشن کے ساتھ انڈونیشین،ہسپانوی،پرتگالی اور فرانسیسی زبان میں بھی شئیر کیا گیا۔

اصل حقیقت یہ ہے کہ اس تصویر میں موجود خاتون چیک میگزین رپورٹر کا مطالعہ کررہی ہیں۔ اصل تصویر میں خاتون کے ہاتھ میں موجود کتاب کا رنگ سرخ نہیں ہے جیسا متعدد بار شئیر کی گئی تصویر میں دکھایا گیا۔

گوگل ریورس امیج اور کی ورڈز سرچز کےذریعے تحقیق سے معلوم ہوا کہ یہ تصویر سب سے پہلے انٹرنیشنل ایڈورٹائزنگ ایوارڈز پروگرام ( دی کلیو ایوارڈز ) کی ویب سائٹ پر2018 میں جاری کی گئی۔

شمسیہ حسنی کی جانب سے بھی 14 ستمبر کو ٹویٹ کرکے تصدیق کی گئی کہ وہ جانتی ہیں کہ لوگ ان کے کام کو آگے لے جانے کی خواہش مند ہوتے ہیں مگر یہ مذکورہ تصویر ان کا آرٹ ورک نہیں ہے ۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube