Tuesday, September 21, 2021  | 13 Safar, 1443

القاعدہ جلد امریکا پر ایک حملہ کریگی،انٹیلی جنس ایجنسی

SAMAA | - Posted: Sep 15, 2021 | Last Updated: 6 days ago
SAMAA |
Posted: Sep 15, 2021 | Last Updated: 6 days ago

فائل فوٹو

امریکی انٹیلی جنس کے ڈائریکٹر ڈیفنس نے اس بات کا خدشہ ظاہر کیا ہے کہ القاعدہ دوبارہ امریکا پر حملہ کرسکتی ہے۔

بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق امریکی ڈائریکٹر ڈیفنس انٹیلی جنس ایجنسی لیفٹیننٹ جنرل اسکاٹ بیریئر نے سیکیورٹی سمٹ سے خطاب میں کہا کہ افغانستان پر طالبان کے قبضے کے بعد القاعدہ کا خطرہ بڑھ گیا ہے، تاہم القاعدہ کو بڑے حملے کی صلاحیت حاصل کرنے میں ایک سے 2 سال لگیں گے۔

انہوں نے کہا کہ انٹیلی جنس ایجنسیوں کی افغانستان میں دہشت گردوں کو مانیٹر کرنے کی صلاحیت کم ہوگئی ہے، جو دوبارہ رسائی کیلئے راستے تلاش کر رہے ہیں۔ سی آئی اے کے ڈپٹی ڈائریکٹر ڈیوڈ کوہن نے بھی دہشت گردی کے خطرات بڑھنے کا اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ چند سالوں میں القاعدہ کے علاوہ داعش خراساں بھی حملے کرسکتی ہے۔

MWI Podcast: Intelligence and the Future Battlefield, with Lt. Gen. Scott Berrier

انہوں نے امریکی ڈائریکٹر ڈیفنس انٹیلی جنس ایجنسی اسکاٹ بیریئر کے مؤقف سے اتفاق کرتے ہوئے کہا ہے کہ القاعدہ آئندہ چند سالوں میں ایک اور حملے کی صلاحیت حاصل کر لے گی۔ افغانستان میں القاعدہ کی ممکنہ نقل و حرکت کے کچھ اشارے ملنا شروع ہوگئے ہیں، یہ ابتدائی ایام ہیں، ہم اس پر قریب سے نظر رکھیں گے۔

دوسری جانب اقوامِ متحدہ نے تخمینہ پیش کیا ہے کہ افغانستان میں اگلے برس غربت کی شرح 97 فیصد ہو جائے گی۔

Ex-deputy CIA director: Trump process is 'very disconcerting' on Iran deal  - Tehran Times

قبل ازیں خلیج فارس ریاستوں کے 4 روزہ دورے کے اختتام پر کویت سٹی میں جمعرات کو صحافیوں کے ایک گروپ سے گفتگو کرتے ہوئے امریکا کے وزیرِ دفاع لائیڈ آسٹن نے کہا تھا کہ القاعدہ جس نے 20 سال قبل افغانستان کو امریکا پر حملہ کرنے کے لیے بیس بنایا تھا وہ امریکا کے افغانستان سے انخلا اور طالبان کے اقتدار میں آنے کے بعد دوبارہ سر اٹھانے کی کوشش کر سکتی ہے۔

ان کے بقول، امریکا افغانستان میں القاعدہ کی واپسی روکنے کے لیے تیار ہے۔ پوری دنیا دیکھ رہی ہے کہ آگے کیا ہوتا ہے اور کیا القاعدہ کے پاس افغانستان میں دوبارہ پنپنے کی صلاحیت ہے یا نہیں۔

یاد رہے کہ گیارہ ستمبر 2001 کو ہونے والے حملوں کو امریکا کی تاریخ کی بدترین دہشت گردی قرار دیا جاتا ہے۔ جس میں مبینہ طور پر القاعدہ نے 4 مسافر طیارے ہائی جیک کر لیے تھے۔

گزشتہ سال طالبان کے امریکا کے ساتھ فروری 2020 میں ہونے والے معاہدے میں طالبان رہنماؤں نے وعدہ کیا تھا کہ وہ امریکا کیلئے خطرہ بننے والی القاعدہ یا کسی اور تنظیم کی حمایت نہیں کریں گے۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ سی آئی اے کے ڈپٹی ڈائریکٹر ڈیوڈ کوہن معروف ٹی وی سیریز گیم آف تھرونز میں اداکاری کے جوہر بھی دکھا چکے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube