Thursday, October 28, 2021  | 21 Rabiulawal, 1443

ابراہیم رئیسی نےایران کےصدر کی حیثیت سےحلف اٹھالیا

SAMAA | - Posted: Aug 6, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Aug 6, 2021 | Last Updated: 3 months ago

فوٹو: ٹوئٹر

ایران کے سابقہ جج ابراہیم رئیسی صدر کی حیثیت سے اپنے عہدے کا حلف اٹھالیا۔

ابراہیم رئیسی نے نئے ایرانی صدر کا حلف اٹھاتے ہوئے اپنے خطاب میں کہا کہ “میں اسلامی جمہوریہ ایران کے سرکاری مذہب اور انتظامیہ اور آئین کی حفاظت کا حلف لیتا ہوں”۔

ایرانی نیوز ایجنسی کے مطابق حلف برداری کی تقریب میں شرکت کرنے والوں میں پاکستان کی جانب چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی، افغانستان کے صدر اشرف غنی، عراق کے صدر برھم صالح اور یورپی یونین کے خارجہ امور کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل انرکی مورا بھی شامل تھے۔

تقریب حلف برداری میں فلسطین کی مزاحمتی تحریک حماس کے رہنماء اسماعیل ہانیہ اور حزب اللہ کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل نعیم قاسم بھی موجود تھے۔

ایران: صدارتی انتخابات میں ابراہیم رئیسی کامیاب

اس سے قبل ابرہیم رئیسی نے منگل کے روز اپنی ایک تقریر میں امریکہ کی جانب سے لگائی گئی پابندیوں کو ‘ظالمانہ’ قرار دیا تھا اور کہا تھا وہ انہیں ختم کروانے کی کوشش کریں گے۔

Ultraconservative Raisi takes oath as Iran's president - Newspaper -  DAWN.COM

یاد رہےکہ امریکا نے ایران کے جوہری پروگرام کو محدود کرنے کے بدلے پابندیوں میں نرمی کے بین الاقوامی معاہدے سے نکلنے کے بعد ایران پر 2018کے شروع میں پابندیاں لگادی تھیں۔

واضح رہے کہ ابراہیم رئیسی 2017میں منعقدہ صدارتی انتخابات میں حصہ لیا تھا مگر وہ موجودہ صدر حسن روحانی سے ہار گئے تھے۔

 ابراہیم رئیسی نے 1979 کے انقلابِ ایرن کے فورا بعد ہی اہم عہدوں پر کام کیا ہے۔ صرف 20 سال کی عمر میں وہ ضلع کراج اور پھر ہمدان صوبے کے لیے پراسیکیوٹر مقرر ہوئے اس کے بعد انہیں تہران کے نائب پراسیکیوٹر کی حیثیت سے ترقی دی گئی۔

ایران میں صدارتی انتخابات آج ہوں گے

ابراہیم رئیسی 1989 میں تہران کے چیف پراسیکیوٹر بنے اور پھر سال 2004 میں نائب عدلیہ کے سربراہ کے عہدے پر 10 سال تک فائز رہے۔

ابراہیم رئیسی 2019 سے ایرانی عدلیہ کے سربراہ کی حیثیت سے خدمات سرانجام دے رہے تھے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube