Thursday, September 23, 2021  | 15 Safar, 1443

افغانستان:طالبان کو ہرات میں پسپائی کا سامنا

SAMAA | - Posted: Jul 30, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 30, 2021 | Last Updated: 2 months ago

افغان حکومت نے100اضلاع میں پولیس کمانڈرزتبدیل کردیے

افغانستان ميں قبضے کے لیے جاری جنگ میں طالبان کے 40 جنگجو افغان فورسز کے ہاتھوں مارے گئے جبکہ ان کے متعدد ساتھی زخمی بھی ہوئے۔

طالبان اور افغان فوجیوں میں ان دنوں شدید لڑائی جاری ہے۔ گزشتہ ہفتے طالبان نے ہرات کے اہم حصوں پر قبضہ کرليا تھا تاہم انہیں اس وقت پسپا ہونا پڑا جب افغان فورسز نے ان کے 40 جنگجو مار کر انہیں پیچھے دھکیل دیا۔ طالبان کے جنگجووں کو مار کر پسپا کرنے کا دعویٰ افغان حکام کی جانب سے کیا گیا ہے تاہم طالبان کی جانب سے اس بات کی تصديق نہيں ہوسکی۔

افغان حکومت نے طالبان کی پيش قدمی روکنے کے لیے 100 اضلاع کے پوليس کمانڈرز تبديل کرديے ہیں جبکہ دوسری جانب طالبان نے افغانستان سے پاکستان آنے جانے والي اشياء پر نيا ٹيرف نافذ کرکے ٹيکس اکٹھا کرنا شروع کردیا ہے۔

صدر اشرف غنی کا کہنا ہے کہ دنيا بھر کے علماء کا اتفاق ہے کہ طالبان کی جنگ کی کوئی مذہبی حيثيت نہيں۔ انہوں نے طالبان پر زور دیا کہ وہ مل بيٹھ کر مسئلے کا حل نکاليں۔

اُدھر نيٹو نے ترکی ميں افغان اسپيشل فورسز کو ٹريننگ دينی شروع کردی ہے جبکہ امريکی محکمہ خارجہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ افغانستان ميں دہشت گرد کيمپ نظر آنے پر امريکا فوری کارروائی کرے گا۔

دریں اثناء 750 افغان مترجمين کے پہلے گروپ کو ان کے خاندانوں سميت امريکا پہنچا ديا گيا ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube