Thursday, September 16, 2021  | 8 Safar, 1443

سابق صدر کی گرفتاری، جنوبی افریقا میں فسادات، 72افراد ہلاک

SAMAA | - Posted: Jul 14, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 14, 2021 | Last Updated: 2 months ago

جنوبی افریقا میں سابق صدر جیکب زوما کو سزا اور گرفتاری کے بعد جیل بھیجنے پر شروع ہونیوالے پرتشدد مظاہروں کے دوران 72 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

جنوبی افریقا کے مختلف شہروں میں جیکب زوما کی گرفتاری پر مظاہروں کے دوران مشتعل ہجوم اور پولیس کے ساتھ جھڑپیں ہوئیں، مظاہرین نے کاروباری مراکز میں توڑ پھوڑ بھی کی۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق تشدد کے واقعات کا آغاز گزشتہ ہفتے اس وقت ہوا جب جیکب زوما کو توہینِ عدالت کے جرم میں سنائی گئی 15 ماہ قید کی سزا پر عملدرآمد کیلئے انہیں گرفتار کیا گیا۔

جنوبی افریقا میں گزشتہ کئی برسوں کی بدترین بدامنی میں جوہانسبرگ سمیت مختلف شہروں میں لوٹ مار کرنے والوں نے شاپنگ مالز اور دیگر دکانوں و کاروباری مراکز میں توڑ پھوڑ کی، سیکیورٹی فورسز لوٹ مار اور حملوں کو روکنے میں تاحال ناکام دکھائی دے رہی ہے۔

پولیس نے منگل کو کہا ہے کہ زیادہ تر اموات کی وجہ وہ دھکم پیل تھی جو لوٹ مار کے دوران دیکھنے میں آئی، اب تک ایک ہزار سے زیادہ افراد کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔

جنوبی افریقا کے صدر سرل راما فوسا نے پیر کو قوم سے خطاب میں تشدد اور لوٹ مار کے واقعات کی مذمت کرتے ہوئے شہریوں پر پُرامن رہنے کیلئے زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ تشدد، لوٹ مار اور لاقانونیت کا راستہ صرف بربادی کی طرف ہی لے کر جائے گا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube