کشمیرکی خصوصی حیثیت: مودی اےپی سی کی صدارت کرینگے

SAMAA | - Posted: Jun 24, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Jun 24, 2021 | Last Updated: 1 month ago

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے زیر قیادت نام نہاد آل پارٹیز کانفرنس آج ہوگی۔

انتہاء پسند مودی سرکار کی جانب سے اہم کشمیری سیاسی جماعتوں کی قیادت کو 24جون کو دہلی میں آل پارٹی میٹنگ کی دعوت دی گئی ہے۔

نریندر مودی کے دورہ مقبوضہ کشمیر پر جاتے ہی وادی ميں انٹرنيٹ سروس دو دن کےلیے معطل جبکہ بانہال سے بارہ مولا تک ٹرین سروس کی معطلی میں بھی 30 جون تک توسیع کردی ہے۔

کانگریس نے مقبوضہ کشمير کا اسٹيٹس 5 اگست 2019 سے پہلے کی پوزيشن پر لانے کا مطالبہ کرديا۔

مقبوضہ کشمیر کے سابق وزرائے اعلیٰ فاروق عبداللّٰہ اور محبوبہ مفتی نے بھارتی وزیراعظم مودی کی آل پارٹی میٹنگ (اے پی سی) میں شرکت کی دعوت قبول کرلی۔

گزشتہ روز مقبوضہ کشمیر کی سیاسی جماعتوں کے اتحاد گپکار کا سرینگر میں فاروق عبداللہ کی رہائش گاہ پر اہم اجلاس ہوا تھا، جس میں فاروق عبداللّٰہ کا کہنا تھا کہ گپکار ڈیکلیریشن کا موقف واضح ہے اور اس میں کوئی تبدیلی نہیں ہے۔

اسی طرح محبوبہ مفتی کا کہنا تھا کہ بھارتی حکومت دوحا میں طالبان سے بات چیت کررہی ہے، انہیں مقبوضہ کشمیر میں بھی ڈائیلاگ کرنا چاہیے، انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے بھارت کو پاکستان سے بھی مذاکرات کرنےچاہیے۔

کشمیری رہنما مظفر شاہ نے کہا کہ آرٹیکل 370 اور 35 اے پر کسی بھی صورتحال میں سمجھوتہ نہیں ہوسکتا، کشمیری رہنما یوسف تاری گامی نے کشمیری قیدیوں کی رہائی یا ان کی مقبوضہ کشمیر کی جیلوں میں منتقلی کا مطالبہ کیا۔

یاد رہے کہ بھارتی حکومت نے نام نہاد کل جماعتی کانفرنس میں شرکت کرنے والوں کو ملاقات کا ایجنڈا تک نہیں دیا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube