Monday, September 20, 2021  | 12 Safar, 1443

اسرائیلی وزیراعظم نےفلسطینیوں کیخلاف بربریت کااصل مقصد بتادیا

SAMAA | - Posted: May 20, 2021 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: May 20, 2021 | Last Updated: 4 months ago

حملوں میں اب تک معصوم بچوں،خواتین سمیت 230شہید

فلسطینی مسلمانوں پر اسرائیل کے متواتر حملوں کے پیچھے چھپا اصل مقصد سامنے آگیا جس کا وزيراعظم نیتن یاہو نے برملا اظہاربھی کردیا۔

اسرائیلی وزيراعظم نیتن یاہو نے غزہ پر حملے کے بعد شہر پر قبضے کا ارادہ ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس مقصد کے حصول تک حملے جاری رہیں گے۔ نیتن یاہو کا کہنا ہے کہ غزہ پر کنٹرول تک حملے جاری رکھے جائیں گے۔

دریں اثناء بے گناہ مسلمان شہریوں پر بمباری کا سلسلہ جاری ہے جس کے نتیجے میں شہادتوں کی کل تعداد 230 ہوچکی ہے۔ اسرائیل کی جاری بربریت کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ گزشتہ روز فلسطینیوں پر نصرف 25 منٹ کے دوران 122 بم گرائے گئے تھے۔

غزہ پر اسرائیلی حملے:جنرل اسمبلی کا اجلاس آج ہوگا

اب تک کی اطلاعات کے مطابق شہید ہونے والے 230 مظلوم شہریوں میں 64 بچے اور 48 خواتین بھی شامل ہیں۔

نيتين ياہو نے حملے روکنے سے صاف انکار کر ديا ہے اور جمعرات کو بھی اسرائیل کے جنگی طياروں نے صبح سويرے خان يونس اور رفحہ پر بم بر سا ديے۔ جبکہ شمالی غزہ ميں جباليہ کی آبادی کو بھی نشانہ بنايا گیا۔

اسرائیل کی حمایت، ایپ اسٹورز پر فیس بک کی ریٹنگ گرگئی

فلسطين چلڈرن ريليف فنڈ کی بلڈنگ اور ایک معروف دکان سامير منصور بک اسٹور سميت کئی عمارتيں تباہ ہوگئيں۔

دیار البلاح میں ایک معذور شخص، اس کی حاملہ بیوی اور 2 سالہ بیٹی شہید کردیے گئے۔ بتایا جاتا ہے کہ میزائل گرنے کے وقت یہ خاندان دوپہر کا کھانا کھانے دسترخوان پر بیٹھا تھا۔

السواتی ميں سولہ برس کا عمر امين شہيد ہوا اور روٹی پکانے کے ليے بجلی کا چولہا لينے جانے والی 11 سالہ ديما کی زندگی کا چراغ بھی بجھا دیا گیا۔

اسرائیلی فضائی حملوں میں صحافی سمیت مزید 4فلسطینی شہید

اسرائيلی فورسز نے الخليل ميں ایک نہتی خاتون کو گولی مار کر شہید کردیا جبکہ حيا ابوالوفا جنہوں نے خاندان کے 42 افراد کو کھویا ہے کا کہنا تھا کہ ہمیں ان بے فائدہ احتجاجوں کی کوئی ضرورت نہيں اس کے بجائے آپ مسئلے کے اصل حل کي طرف آیا جائے۔

سيو دی چلڈرن کے مطابق ايک ہفتے ميں اسرائيلی جنگی طياروں کے حملوں ميں 50 اسکول تباہ ہوچکے ہیں 41 ہزار ا800 سو سے زائد بچے متاثر ہوئے ہيں۔

غزہ پر اسرائيلی حملوں ميں اب تک 75 ہزار افراد بے گھر ہوچکے ہيں، سينکڑوں آشيانے مليا ميٹ ہوئے، 180 کمرشل عمارتيں فيکٹرياں اور فلاحی مراکز تباہ ہوگئے۔

ايک اندازے کے مطابق فلسطينيوں کا اب تک 333 ملين ڈالر کا نقصان ہوچکا ہے۔

اسرائیل اور حماس کے مابین لڑائی کا موجودہ دور 10 مئی سے شروع ہوا تھا جب مسجد اقصیٰ میں فلسطینی مظاہرین اور اسرائیلی پولیس کے مابین کئی دن جھڑپوں کے بعد مزاحمتی گروپ نے یروشلم کی طرف طویل فاصلے سے راکٹ فائر کیے تھے۔ کمپاؤنڈ میں پولیس کے بھاری ہتھکنڈوں اور یہودی آباد کاروں کے ذریعہ درجنوں فلسطینی خاندانوں کو جبری طور پر بے دخل کرنے سے کشیدگی پھیل گئی تھی۔

اسرائیلی بمباری 9ویں روز بھی جاری، مزید 24فلسطینی شہید

نیتن یاہو نے امریکی صدر کی حمایت کی تعریف کرتے ہیں کہا کہ اسرائیل مقصد کے پورا ہونے تک اس آپریشن کو جاری رکھنے کے لیے پرعزم ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube