سوئٹزرلینڈ: نقاب پرپابندی، 51فیصد عوام نے حمایت کردی

SAMAA | - Posted: Mar 8, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Mar 8, 2021 | Last Updated: 2 months ago

فوٹو: اے ایف پی

سوئٹزرلینڈ میں عوامی ریفرنڈم کے ذریعے معمولی اکثریت نقاب پر پابندی عائد کردی گئی۔

بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق حجاب پر پابندی عائد کرنے سے متعلق عوامی ریفرنڈم میں رائے شماری ہوئی جس میں معمولی اکثریت کے باعث عوامی مقامات پر حجاب پہننے پر پابندی عائد کردی گئی۔

Muslim face coverings explained

مقامی حکومت کی جانب سے جاری اعلان میں کہا گیا ہے کہ حجاب کے حق میں 51.2 فیصد ووٹ پڑے جب کہ 49 فیصد سے کچھ زائد نے حجاب پر پابندی کی مخالفت کی۔

سوئٹزرلینڈ:عوامی مقامات پرنقاب پرپابندی،ووٹنگ7مارچ کوہوگی

سوئزرلینڈ کی مقامی حکومت نے یورپی یونین کے ممبر ممالک فرانس، بیلجیم، آسٹریا اور ڈنمارک کی طرح برن میں بھی مسلم خواتین کے عوامی مقامات پر نقاب یا برقعے کے استعمال پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ سوئٹزرلینڈ میں 40 ہزار سے زائد مسلمان آباد ہیں جو کل آبادی کا 5 فیصد تصور کیے جاتے ہیں۔

A poster promoting "Yes to the burka ban" is seen in Oberdorf, in the canton of Nidwalden, Switzerland, 16 February 2021

ملک میں ریفرنڈم کا مطالبہ دائیں بازو کی قدامت پسند سیاسی جماعت ’اَیگرکِنگر کمیٹی‘ نے کیا تھا۔ ریفرنڈم کے نتائج پر اس جماعت نے جشن بھی منایا۔

یاد رہے کہ سوئٹزر لینڈ میں براہ راست جمہوری نظام ہے اور یہاں آئے دن متنازعہ معاملات پر عوامی ریفرینڈم منعقد ہوتے رہتے ہیں۔ اگر کسی بھی معاملے پر ایک لاکھ لوگوں کے دستخط حاصل ہوجاتے ہیں تو 86 لاکھ کی آبادی والے اس ملک میں اسے ریفرینڈم کے لیے پیش کیا جاسکتا ہے۔

فرانسیسی صدر کی اسکارف پر پابندی کی کوشش ناکام

پابندی سے کیا ہوگا؟

 پابندی عائد ہوجانے کے بعد کسی بھی شخص کو عوامی مقامات بشمول دکانوں اور دیہی علاقوں میں بھی اپنے چہرے کو مکمل طور پر پوشیدہ رکھنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube