میانمار: فوج نے سوشل میڈیا ایپس بلاک کردیں

SAMAA | - Posted: Feb 4, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 4, 2021 | Last Updated: 3 months ago

فوٹو: فوربز میگزین

میانمار میں فوجی بغاوت کے خلاف مہم چلانے پر فیس بک سمیت تمام سوشل میڈیا ایپس بلاک کردی گئیں۔

الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق میانمار میں فوج کی جانب سے حکومت کا تختہ الٹنے اور اہم سیاسی رہنماؤں کو گرفتار کرنے کے بعد عوامی دباو کا سامنا ہے جس کے پیش نظر فوج نے فیس بک سمیت سوشل میڈیا کے تمام ایپلی کیشن بلاک کردیں۔

 رپورٹس کے مطابق میانمار میں حالیہ فوجی بغاوت کے بعد یہ سوشل میڈیا پلیٹ فارم لوگوں کے درمیان روابط کا انتہائی اہم ذریعہ ثابت ہورہا ہے خاص طور پر اہم حکومتی رہنماؤں کی گرفتاری کے بعد اپوزیشن کی جانب سے فوجی بغاوت کے خلاف باقائدہ مہم چلائی جارہی ہے جسے عوام بھرپور سپورٹ کررہی ہے۔

Image result for Myanmar military blocks Facebook, social media as pressure grows

وزارت مواصلات کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ سوشل میڈیا پر پابندی کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ کچھ لوگ ملکی استحکام کے لیے خطرہ بن رہے ہیں اور وہ فیس بک پر جعلی خبروں سمیت ایسی افواہیں پھیلارہے ہیں جس کی وجہ سے سوشل میڈیا پر 7 فروری تک پابندی عائد کی گئی ہے۔

یاد رہے کہ فوجی بغاوت کیخلاف میانمار کے 70 اسپتالوں کے عملے نے فوج کے اقتدار پر قبضے کے خلاف احتجاجاً کام کاج چھوڑ دیا ہے جبکہ تحریک میں نوجوان، طلبہ اور طبی عملہ پیش پیش ہے۔

واضح رہے کہ میانمار کی فوج نے یکم فروری کو اقتدار پر قبضہ کرتے ہوئے آنگ سان سوچی سمیت حکمراں جماعت نیشنل لیگ آف ڈیموکریسی کے درجنوں رہنماؤں کو حراست میں لے لیا تھا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube