Wednesday, August 4, 2021  | 24 Zilhaj, 1442

ایران کی افغان طالبان کو مذاکرات کیلئے ثالثی کی پیشکش

SAMAA | - Posted: Feb 1, 2021 | Last Updated: 6 months ago
SAMAA |
Posted: Feb 1, 2021 | Last Updated: 6 months ago
Iran and Afghan Taliban

فوٹو: آن لائن

ایران نے طالبان کو افغان حکومت کے ساتھ جاری مذاکرات میں ثالثی اور تعاون کی پیشکش کر دی۔

افغان طالبان کے وفد نے ملا عبدالغنی برادر کی قیادت میں تہران میں ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف سے ملاقات کی۔ ایرانی وزیر خارجہ نے قطر میں امریکا کے ساتھ شروع ہونے والے امن مذاکرات میں تعطل آنے کے بعد ثالثی کی پیشکش کی۔

ایرانی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ افغانستان میں تمام نسلی گروہوں اور مکاتب فکر پر مشتمل حکومت سازی کی ایران بھرپور حمایت کرے گا۔

جواد ظریف کا کہنا تھا کہ افغانستان میں جاری تنازعات کے خاتمے کے لیے امریکا اچھا ثالث نہیں ہے۔

افغان طالبان نے افغانستان میں اسلامی نظام کا مطالبہ کردیا

فروری 2020 میں طالبان اور امریکا کے درمیان ہونے والے معاہدے کے تحت افغان حکومت نے طالبان کے 5000 قیدی رہا کرنے تھے جب کہ طالبان نے اپنی حراست میں موجود افغان حکومت کے 1000 قیدیوں کو رہا کرنا تھا۔

افغان حکومت نے 4600 قیدی تو رہا کر دیے تھے تاہم صدر اشرف غنی کی انتظامیہ کا مؤقف تھا کہ باقی ماندہ 400 قیدی سنگین جرائم میں ملوث ہیں اور ان کی رہائی سے کئی خطرات ہو سکتے ہیں۔

بعد ازاں افغان لویہ جرگہ نے ان قیدیوں کی رہائی کی بھی منظوری دی تو افغان صدر نے قیدیوں کی رہائی کا حکم نامہ جاری کیا۔ البتہ بعض ممالک نے 6 ایسے قیدیوں کی رہائی پر اعتراض کیا جو ان ممالک کے فوجیوں کو ہلاک کرنے میں ملوث تھے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube