چین نے تھرڈ جنریشن نیوکلیئر پاورپلانٹ کا افتتاح کردیا

SAMAA | - Posted: Jan 30, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 30, 2021 | Last Updated: 3 months ago

چین نے مکمل طور پر مقامی طور پر تیار کردہ تھرڈ جنریشن نیوکلیئر پاور پلانٹ سے بجلی کی پیدوار شروع کردی ہے۔

چین کے نیشنل نیوکلیئر کارپوریشن نے ہفتے کو بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ یہ چین کا تھرڈ جنریشن نیوکلیئر ٹیکنالوجی پر مبنی پہلا پلانٹ ہے۔ اس میں استعمال ہونے والی ٹیکنالوجی، جوہری ری ایکٹر ریسرچ، ڈیزائن، مینوفیکچرنگ، تعمیرات اور آپریشن سے متعلق لوازمات چین میں تیار ہوئیں۔

کمپنی کے مطابق چین نے نیوکلیئر ٹیکنالوجی کا پنا 30 سالہ تجربہ کرتے ہوئے عالمی معیار کا ری ایکٹر تعمیر کیا ہے اور یہ اس بات کی عکاسی کرتا ہے کہ نیوکلیئر ٹیکنالوجی کے میدان میں چین کے ایک سرکردہ ملک ہے۔

پروجیکٹ سے وابستہ حکام کے مطابق اس کی ڈیزائن سروس کی زندگی 60 سال ہے۔ ریفیوئلنگ سائیکل 18 ماہ کا ہے اور پاور پلانٹ کے استعمال کی شرح 90 فیصد تک ہے۔ یہ چین کے توانائی کے ڈھانچے کو بہتر بنانے اور گرین انرجی کو فروغ دینے میں بھی اہم کردار ادا کرے گا۔

یہ نیوکلیئر پاور ایک ترقی پذیر ملک کے 10 لاکھ گھروں کی سالانہ بجلی کی طلب پورا کرسکتا ہے۔ ساتھ ہی اس سے کوئلے کی کھپت کم کرنے میں بھی مدد ملے گی اور ہر سال 8 3.12 ملین ٹن کاربن ڈائی آکسائیڈ کے اخراج سے چھٹکارا ملے گا جو 70 ملین سے زیادہ درخت لگانے کے مترادف ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube