Tuesday, June 22, 2021  | 11 ZUL-QAADAH, 1442

انڈونیشیا میں ’آگ کا پہاڑ‘ پھر پھٹ گیا

SAMAA | - Posted: Jan 27, 2021 | Last Updated: 5 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 27, 2021 | Last Updated: 5 months ago

Photo/AFP

انڈونیشیا کا سب سے متحرک آتش فشاں ’ماؤنٹ پیراپی‘ پھٹ گیا جس کا لاوا پہاڑ سے بہتے ہوئے نشیبی علاقے تک پہنچ گیا جبکہ سفید بادل جیسا دھواں فضا میں بلند ہو رہا ہے۔

حکام کے مطابق آتش فشاں اتنی شدت سے پھٹ رہا ہے کہ اس کی آواز 18 کلومیٹر دور تک سنائی دے رہی ہے۔

میراپی انڈونیشین زبان میں ’آگ کے پہاڑ‘ کو کہتے ہیں، اس لیے انگلش میں اس آگ کے پہاڑ کا نام ماؤنٹ میراپی مشہور ہے۔ یہاں ماضی میں آتش فشاں پھٹنے کے واقعات میں درجنوں افراد ہلاک اور بستیاں اجڑ چکی ہیں۔ بیشتر مواقع پر انتظامیہ پیشگی احتیاطی تدابیر کے طور پر مقامی آبادی کو محفوظ مقام پر منتقل کرتی ہے۔

انڈونیشیا کے حکام کے مطابق اس پر مرتبہ نومبر میں ہی ماہرین نے خطرے کی گھنٹی بجائی تھی جس پر حکومت نے 2000 سے زائد مقامی لوگوں کو محفوظ مقام پر منتقل کیا تھا جس کے باعث جانی نقصان کی تاحال کوئی اطلاع نہیں۔

آگ کا یہ پہاڑ انڈونیشیا کے گنجان آباد جزیرہ جاوا میں واقع ہے اور اس کی اونچائی 9 ہزار فٹ سے زائد ہے۔ حکام نے مقامی آبادی کو ’ڈینجر زون‘ سے 3 میل دور رہنے کی ہدایت کی ہے۔

ماؤنٹ میراپی پر آج تک کا سب سے خوفناک اور تباہ کن آتش فشاں 2010 میں پھٹ گیا تھا جس میں 345 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ جزیروں پر مشتمل مسلم اکثریتی ملک انڈونیشیا بحرالکاہل کے ایسے خطے میں واقع ہے جس کو ’رنگ آف فائر‘ کہا جاتا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube