کیا آیت اللہ خامنہ ای کا ٹوئٹر اکاؤںٹ بھی بند کردیاگیا

SAMAA | - Posted: Jan 23, 2021 | Last Updated: 3 months ago
SAMAA |
Posted: Jan 23, 2021 | Last Updated: 3 months ago

فائل فوٹو

مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹوئٹر نے ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای سے منسوب ٹوئٹر اکاؤنٹ کو معطل کردیا ہے۔

مختلف میڈیا سائٹس اور صحافیوں کی جانب سے یہ اطلاعات سامنے آئیں کہ ٹوئٹر انتظامیہ نے ایران کے سپریم لیڈر کا ٹوئٹر اکاؤنٹ بند کیا ہے، تاہم ٹوئٹر نے واضح کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے روحانی پیشوا آیت اللہ خامنہ ای سے منسوب اکاؤنٹ کو بند کیا ہے، جو کہ جعلی تھا۔

ٹوئٹر انتظامیہ کا مزید کہنا تھا کہ انہوں نے یہ اکاؤنٹ سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو ڈرون حملے میں قتل کرنے کی دھمکی دینے پر بند کیا۔ مذکورہ اکاؤنٹ
@khamenei_site
کے نام سے ٹوئٹر پر ٹوئٹس کیا کرتا تھا۔ انتظامیہ کے مطابق مذکورہ ٹوئٹر اکاؤنٹ کو ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی، دھونس دھمکی اور تشدد پر اکسانے پر معطل کیا۔

مذکورہ اکاؤنٹ سے سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ جیسی شباہت رکھنے والے شخص کی تصویر شیئر کی گئی تھی جس میں وہ شخص گولف کھیل رہا ہے۔

ٹرمپ کے مشابہہ شخص کی تصویر کو بلندی سے ڈرون کی مدد سے لیا گیا ہے کیونکہ زمین پرایک جدید ڈرون کا سایہ بھی نظر آرہا ہے اور ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ڈرون سے نشانہ بنایا جائے گا۔

تصویر کے ساتھ فارسی میں لکھا گیا کہ ’انتقام ناگزیر ہے، جنرل قاسم سلیمانی کو قتل کرنے اور قتل کا حکم دینے والے سے انتقام لیں گے۔

ٹوئٹ میں مزید یہ بھی لکھا گیا تھا کہ اگرچہ جنرل سلیمانی کے جوتے بھی قاتل سے زیادہ معزز ہیں، لیکن قاتل نے جاتے جاتے ایک ایسی غلطی کی جس کا لازمی بدلہ لیا جائے گا۔

کچھ لوگوں کی جانب سے اس بات کا بھی دعویٰ کیا گیا ہے کہ انہوں نے آیت اللہ خامنہ ای کے قریب حلقوں سے اکاونٹ سے متعلق تصدیق کی ہے، کہ وہ اکاؤنٹ سپریم لیڈر کا ہی تھا، تاہم ایرانی سرکاری میڈیا یا کسی بھی حکام کی جانب سے فی الحال اس پر کوئی مؤقف یا ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube