Wednesday, January 20, 2021  | 5 Jamadilakhir, 1442
ہوم   > بین الاقوامی

فرانس:پاکستانی امام مسجد پرتاحیات پابندی وقید

SAMAA | - Posted: Nov 27, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 27, 2020 | Last Updated: 2 months ago

فوٹو: ٹوئٹر

فرانس میں ویلرلابیل کے علاقے میں پاکستانی امام مسجد لقمان ایچ کو فرانسیسی عدالت نے18مہینے قید کی سزا سنائی ہے اور فرانس میں ان کے داخلے پرتاحیات پاپندی بھی عائد کی دی گئی ہے۔

ڈی ڈبلیو کی رپورٹ کے مطابق لقمان ایچ پر الزام تھا کہ انھوں ٹِک ٹَاک پر 9،10 اور 25 ستمبر کو سوشل نیٹ ورک پر تین ایسی ویڈیوز پوسٹ کی ہیں جن میں شدت پسندی کا عنصر نمایاں ہے۔ امام پر الزام ہے کہ بدنام زمانہ میگزین چارلی ہیبڈو کے پرانے دفتر کے باہر چاقو حملے کے بعد ایپ پر اپنے پیغامات جاری کیے تھے۔

جمعرات کو پنتواس کی عدالت نے ڈیڑھ سال قید اور فرانسیسی علاقوں میں داخلے پرپابندی کی سزا سنائی ہے۔ پنتواس پیرس کا مضافاتی علاقہ ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق لقمان ایچ کو سزا مکمل کرنے کے بعد ملک بدر کردیا جائے گا اور اس کے بعد وہ کھبی فرانس کی سرزمین پر قدم نہیں رکھ سکیں گے۔

عدالت کے صدر اسٹیفن بلٹ نے لقمان ایچ کو ایک مجرم قرار دیتے ہوئے کہا کہ اب انہیں اپنے آبائی پاکستان واپس جانا بھیجا جائے گا۔

امام کے پیغامات کیا تھے؟

امام نے اپنے پیغامات میں کہا تھا کہ ’وفادار مسلمان پیغمبر اسلام کے لیے خود کو قربان کرنے کے لیے تیار ہے‘۔ اگلے دن انہوں نے اپنے پیغام میں’غیر مسلموں اور کافروں پر حملہ کرنے‘ اور انہیں جہنم بھیجنے کی بات کی جبکہ تیسرے اور آخری بیان میں انھوں نے توہین رسول پر اس شخص کو خراج تحسین پیش کیا، جس نے چارلی ہیبڈو کے سابقہ دفتر کے ​​احاطے میں دہشت گردانہ حملہ کیا تھا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube