Friday, January 22, 2021  | 7 Jamadilakhir, 1442
ہوم   > بین الاقوامی

افغان شہریوں کا قتل، 10 آسٹریلوی فوجی برطرف

SAMAA | - Posted: Nov 26, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 26, 2020 | Last Updated: 2 months ago

افغانستان میں نہتے شہریوں کے قتل میں ملوث ہونے کے ناقابل تردید ثبوت سامنے آنے پر آسٹریلیا کی اسپیشل فورسز کے 10 اہلکاروں کو برطرف کردیا گیا۔

غیر ملکی میڈیا کی جانب سے جمعرات کو جاری رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ آسٹریلیا نے اپنے فوجی اہلکاروں کیخلاف جنگی جرائم کے الزامات پر کارروائی کی ہے۔

گزشتہ ہفتے سامنے آنیوالی ایک رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ 19 آسٹریلوی فوجیوں نے 39 غیرمسلح افغان شہریوں اور قیدیوں کو قتل کیا تھا، تاہم ان تمام 19 فوجیوں میں سے کسی کی بھی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔

رپورٹ سامنے آنے کے بعد آسٹریلوی فوج کی جانب سے اعلیٰ سطح پر گزشتہ ہفتے افغانستان سے معافی مانگی گئی تھی۔

آسٹریلوی چینل کے مطابق افغانستان سے متعلق رپورٹ انسپکٹر جنرل آف ڈیفنس کے مقرر کردہ اسٹیٹ جج کی جانب سے لکھی گئی تھی، اس میں 19 موجودہ اور سابقہ فوجیوں کو سزا کی تجویز دی گئی تھی۔ معاملے پر فوری کارروائی کرتے ہوئے 10 فوجیوں کی برطرفی کے احکامات جاری کئے گئے ہیں۔

آسٹریلوی نشریاتی ادارے نے بھی ان 10 اہلکاروں کی شناخت ظاہر نہیں کی، تاہم یہ ضرور بتایا گیا ہے کہ مذکورہ اہلکار گواہ تھے اور ان 19 اہلکاروں کے علاوہ تھے جن کو سزا دینے کی تجویز دی گئی تھی۔

اے بی سی کے مطابق برطرف کئے گئے 10 فوجیوں کے پاس 14 روز کا وقت ہے، جس میں وہ برطرفی کے نوٹس کا جواب دے سکتے ہیں۔

بریرٹن رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ 25 موجودہ اور سابق فوجی اہلکار سنگین نوعیت کے جرائم میں ملوث ہیں۔

آسٹریلیا کی جانب سے امریکی اتحاد میں افغانستان میں موجود غیر ملکی افواج کا حصہ بننے کے لیے فوجی بھیجے گئے تھے۔ 2001 میں طالبان کی افغان حکومت کو بزور ختم کرنے کے بعد یہ پیشرفت عمل میں آئی تھی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube