Monday, January 18, 2021  | 3 Jamadilakhir, 1442
ہوم   > بین الاقوامی

دوحا:نومولود کو کچرے دان میں پھینکنے والے والدین کی شناخت ہوگئی

SAMAA | - Posted: Nov 24, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 24, 2020 | Last Updated: 2 months ago

فائل فوٹو:دوحا ایئرپورٹ

دوحا ایئرپورٹ پر نومولود بچی کو باتھ روم کے کچرے دان میں پھینک کر فرار ہونے والے ماں اور باپ کو شناخت کرلیا گیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق قطر میں دوحا ایئرپورٹ سے ملنے والے نومولود بچی کے والدین کو شناخت کرلیا گیا ہے۔ دونوں کا تعلق جنوبی ایشیا کے ملک سے ہے۔

پبلک پراسیکیوٹر  کی جانب سے والدین کی شناخت کی تصدیق کردی گئی ہے۔ حکام کے مطابق سیکیورٹی اہل کاروں کو بچی کی موجودگی کی اطلاع سی سی ٹی وی ویڈیو کو دیکھ کر ہوئی۔

قطری حکام کا کہنا ہے کہ مذکورہ ماں بچی کو اپنانا نہیں چاہتی تھی، کیوں کہ یہ بچی اس کے شوہر سے نہیں تھی۔ خاتون بچی کو کچرے دان میں پھینک کر اسی وقت فلائٹ سے اپنے ملک روانہ ہوگئی، جس کو واپس لانے کیلئے سفارتی کوششیں شروع کردی گئی ہیں۔

مذکورہ خاتون کے خلاف اقدام قتل کے تحت مقدمہ چلایا جائے گا۔ نومولود بچی کو چھوڑ کر بیرون ملک فرار ہونے والی خاتون کی گرفتاری کیلئے انٹر پول سے بھی مدد لی گئی ہے، جسے 15 سال قید کی سزا سنائی جا سکتی ہے۔ خاتون نے ڈیپارچر لونچ سے ملحقہ باتھ روم کے کچرے دان میں بچی کو پھینکا تھا اور اسی وقت فلائٹ سے اپنے ملک روانہ ہوگئی۔

حکام کا مزید کہنا تھا کہ خاتون کا کسی دوسرے ایشیائی مرد سے تعلقات تھے، جس سے یہ بچی پیدا ہوئی۔ بچی کے باپ نے بچی سے متعلق اعتراف کرلیا۔ حکام سے رابطے کے بعد بچی کے باپ کا کہنا تھا کہ خاتون کی جانب سے باپ کو نومولود کی تصویر بھی بھیجی گئی تھی اور یہ خط میں کہا گیا تھا کہ میں یہ بچی پھینک کر اپنے ملک واپس جا رہی ہوں۔ بچی کی شناخت ڈی این اے اسکریننگ سے کی گئی۔

واضح رہے کہ دوحا ایئرپورٹ کے واش روم سے نومولود کے ملنے کا واقعہ گزشتہ ماہ 2 اکتوبر کو پیش آیا تھا۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ مسلم ملک قطر میں شادی سے پہلے جنسی تعلقات اور شادی سے قبل بچے کی پیدائش کے جرم ہے، جس پر سخت سزائیں ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube