Thursday, December 3, 2020  | 16 Rabiulakhir, 1442
ہوم   > بین الاقوامی

سعودی اتحاد کا قطر کی ناکہ بندی ختم کرنے کا عندیہ

SAMAA | - Posted: Oct 16, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Oct 16, 2020 | Last Updated: 2 months ago

سعودی عرب نے ہمسایہ خلیجی ملک قطر کی 3 سال سے جاری ناکہ بندی ختم کرنے کا عندیہ دیا ہے۔

سعودی عرب نے 2017  میں متحدہ عرب امارات بحرین اور مصر کے ساتھ مل کر قطر کے ساتھ سفارتی اور تجارتی تعلقات منقطع کرنے کے ساتھ اس کی بحری، زمینی اور ہوائی ناکہ بندی کردی تھی۔

جمعرات کو واشنگٹن انسٹی ٹیوٹ فار نیئر ایسٹ پالیسی کے زیر اہتمام تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سعودی عب کے وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے کہا کہ ہم قطر کی ناکہ بندی کا حل تلاش کرنے کے لئے پرعزم ہیں۔ ہم اپنے قطری بھائیوں کے ساتھ بات چیت کیلئے تیار ہیں اور ہم امید کرتے ہیں کہ وہ بھی اس پر آمادہ ہوں گے۔

شہزادہ فیصل نے کہا کہ سعودی عرب سمیت دیگر تین ممالک کے قومی سلامتی سے علق جائز خدشات کو دور کرنے کی ضرورت ہے اور میں سمجھتا ہوں کہ مستقل قریب میں ہم اس مسئلے کے حل کی جانب گامزن ہوں گے۔

ناکہ بندی کرنے والے چار عرب ممالک کا الزام ہے کہ قطر دہشت گردی کی معاونت کے ساتھ ان ممالک کے اندرونی معاملات میں مداخلت کرتا ہے۔ دوحہ پر یہ بھی الزام لگایا گیا تھا کہ وہ عرب ممالک کے علاقائی حریف ایران کے بہت قریب ہے۔

قطر روز اول سے ان الزامات کی سختی سے تردید کرتا آرہا ہے۔

ٹرمپ انتظامیہ اس ناکہ بندی کو ختم کرانے اور ایران کے خلاف خلیجی اتحاد کی راہ ہموار کرنے پر زور دے رہی ہے۔ اس تنازع کو ختم کرنے کی ماضی کی متعدد کوششیں ناکام ہوچکی ہیں کیونکہ قطر نے سعودی اتحادیوں کے تمام مطالبات کو مسترد کردیا ہے جن میں الجزیرہ میڈیا نیٹ ورک کو بند کرنا، اسلام پسند گروہوں سے تعلقات منقطع کرنا، ایران کے ساتھ تعلقات کو محدود کرنا اور ملک میں تعینات ترک فوج کو نکالنا شامل ہیں۔

قطری امیر شیخ تمیم بن حماد آل تھانوی نے کہا ہے کہ وہ بحران کے حل کے لئے بات چیت کے لئے تیار ہیں قطر کی خود مختاری کا احترام کرنا ہوگا۔

کویت کی جانب سے قطر اور سعودی اتحاد کے مابین ثالثی کی کوششیں جاری ہیں۔ جون میں کویت نے کہا کہ تنازع کو حل کرنے کی طرف پیشرفت ہوئی ہے لیکن یہ پیشرفت بہت چھوٹی ہے۔

گذشتہ دسمبر میں قطری وزیر خارجہ شیخ محمد بن عبد الرحمن آل تھانوی نے کہا تھا کہ سعودی عرب کے ساتھ ابتدائی بات چیت نے جمود کو توڑ دیا ہے لیکن ایک ماہ بعد انہوں نے کہا کہ تنازع کو حل کرنے کی کوششیں ناکام ہوگئی ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube