Thursday, December 3, 2020  | 16 Rabiulakhir, 1442
ہوم   > بین الاقوامی

بھارتی ‘سائنسدان’ کا گوبر سے موبائل چپ بنانے کا دعویٰ

SAMAA | - Posted: Oct 13, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Oct 13, 2020 | Last Updated: 2 months ago

بھارت کی ایک ہندو قدامت پرست تنظیم راشٹریہ کامدینو آیوگ (آر کے اے) نے گائے کے گوبر سے موبائل فون کے چپ تیار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

دلی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے راشٹریہ کامدینو آیوگ کے چیئرمین ولبھ بھائی کتھیریا نے کہا کہ گائے کے گوبر میں تابکاری کا مقابلہ کرنے اور اسے کم کرنے کی گنجائش ہے۔

انہوں نے گائے کے گوبر سے بنی ایک ’چپ‘ دکھاتے ہوئے دعویٰ کیا کہ اس سے موبائل فون کی تابکاری کم ہوتی ہے۔ یہ چپ بیماریوں کے خلاف ایک محافظ ثابت ہوگا۔

گائے کے گوبر کی مصنوعات کو فروغ دینے کے لیے شروع کی جانے والی ملک گیر مہم ’کامدینو دیپاولی مہم‘ کے آغاز کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کتھیریا نے کہا کہ گوبر دوا ہے۔ بالی ووڈ اداکار اکشے کمار بھی گائے کا گوبر کھاتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ گائے کے گوبر سے تابکاری کم ہوتی ہے۔ اس کی مختلف گھریلو مصنوعات بناکر استعمال کرنے سے پورے گھر کو ماحول دوست بنایا جاتا ہے۔

 کتھیریا نے کہا کہ جدید سائنس نے گائے کے گوبر کے فوائد کو نظرانداز کیا ہے۔ ہم اپنی سائنس کو بھول گئے ہیں۔ اب ہم نے ایک تحقیقی منصوبہ شروع کیا ہے۔ ہم ان موضوعات پر تحقیق کرنا چاہتے ہیں جن کو ہم ایک افسانہ سمجھتے ہیں۔

انہوں نے عوام اور میڈیا پر زور دیا کہ ایک مثبت مہم چلائے جائے تاکہ کوئی بھی گائے باہر سڑک اور گلی میں نہ رہ جائے۔ اگر گائے دودھ نہیں بھی دیتی تو لوگ اس کے پیشاب اور گوبر کیلئے اسے گھر میں رکھنا شروع کردیں۔

کتھیریا کی پریس کانفرنس سننے کیلئے یہاں کلک کریں

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube