Wednesday, September 23, 2020  | 4 Safar, 1442
ہوم   > بین الاقوامی

ٹک ٹاک کومائیکروسافٹ سےمعاہدے کیلئے45دن کی مہلت مل گئی

SAMAA | - Posted: Aug 4, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Aug 4, 2020 | Last Updated: 2 months ago

بشکریہ یونی ورسل سائٹ

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اعلان کے بعد آئی ٹی کمپنی مائیکرو سافٹ نے چھوٹی ویڈیوز شیئر کرنے والی بین الاقوامی سوشل میڈیا ایپ ٹک ٹاک کو معاہدے اور مذاکرات کیلئے 45 روز کی مہلت دے دی۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی ایسوسی ایٹ پریس کے مطابق معاہدے اور مذاکرات سے قبل مائیکرو سافٹ نے اس بات کا عندیہ دیا تھا کہ وہ امریکا میں ٹک ٹاک ایپ کو خریدنا چاہتی ہے۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ جمعہ 31 جولائی کو چینی موبائل ایپ ٹک ٹاک کو ملک میں بند کرنے کا اعلان کرچکے ہیں۔ انہوں نے ایک ہفتے کے اندر اندر ایگزیکٹو آرڈر کے تحت ایپ پر پابندی لگانے کا اعلان کیا ہے۔

آپ ضرور یہ جان کر حیران ہونگے کہ چینی سوشل میڈیا جائنٹ بائٹ ڈانس کی ملکیت ٹک ٹاک امریکا سمیت دنیا بھر میں استعمال کی جاتی ہے، جسے اب تک کے جاری اعداد و شمار کے مطابق 2 ارب دفعہ ڈاؤن لوڈ کیا جا چکا ہے جن میں 16 کروڑ سے زائد مرتبہ اسے امریکا میں ڈاؤن لوڈ کیا گیا۔

امریکی عوام نہیں بلکہ امریکی سیکیورٹی عوام یہ سمجھتے ہیں کہ چین اپنی اس ایپ سے لوگوں کی جاسوسی کرتا ہے اور اسے موبائل میں انسٹال کرنے کے بعد صارف کے ڈیٹا تک رسائی حاصل کرلیتا ہے، جو کہ قومی سلامتی کیلئے ایک خطرہ ہے۔

امریکا کے ان تحفظات پر ٹک ٹاک کی ملکیتی کمپنی بائٹ ڈانس انتظامیہ نے وضاحت دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ امریکی صارفین کا ڈیٹا چینی حکومت کے ساتھ شیئر نہیں کرتی بلکہ یہ ڈیٹا امریکا اور سنگاپور میں محفوظ کیا جاتا ہے۔

دوسری جانب امریکی صدر کے بیان کے مطابق مائیکرو سافٹ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ مائیکروسافٹ صدر ٹرمپ کے خدشات کے بارے میں مناسب اقدامات کرنے کی اہمیت کو سمجھتا ہے۔ ہم ٹک ٹاک کو خریدنے کے عمل کے دوران قومی سلامتی کے امور کو باریکی سے دیکھنے اور امریکا کے معاشی مفادات کے تحفظ پر یقین رکھتے ہیں۔

کمپنی نے اس بات کو بھی واضح کیا کہ مذاکرات کی روشنی میں کسی بھی معاہدے کے طے پانے کی یقین دہانی نہیں کروائی جا سکتی۔ بائٹ ڈانس نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ کمپنی امریکا میں اپنی سٹریمنگ کو جاری رکھنے کے لیے تمام امکانات کا جائزہ لے رہی ہے۔ بیجنگ میں کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر زینگ یی منگ نے ایک میمو میں کہا کہ ان کی ٹیم 24 گھنٹے کام کر کے اس بات کو ممکن بنانا چاہتی ہے کہ بہترین نتایج حاصل کیے جا سکیں۔

کمپنی کے ملازمین کو جاری ہونے والے اس میمو میں زینگ نے کہا کہ موجودہ جیو پالیٹیکس اور عوامی رائے کی فضا پیچیدہ ہوتی جا رہی ہے۔ ہم نے ہمیشہ اپنے صارفین کے ڈیٹا کی مکمل حفاظت کی ہے۔

امریکی حکام کا مؤقف ہے کہ ایسی یقین دہانیاں کوئی معنی نہیں رکھتیں، کیونکہ چین میں کمپنیوں کے پاس چین کی کمیونسٹ پارٹی کی بات ماننے کے علاوہ کوئی راستہ نہیں ہوتا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube