Sunday, September 27, 2020  | 8 Safar, 1442
ہوم   > بین الاقوامی

قاہرہ مصر کا دارالحکومت نہیں رہے گا

SAMAA | - Posted: Jul 15, 2020 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 15, 2020 | Last Updated: 2 months ago

مصر اپنے قدیم دارالحکومت قاہرہ سے 45 کلو میٹر کے فاصلے پر نیا دارالحکومت تیار کررہا ہے، جس کا رقبہ سنگاپور کے برابر ہوگا۔ سوشل میڈیا پر نئے دارالحکومت کی تصاویر وائرل ہیں۔

مصری میڈیا کے مطابق قاہرہ سے 45 کلو میٹر دور نو تعمیر شدہ دارالحکومت میں 65 لاکھ افراد بسائے جائیں گے، اسے سرکاری اور نجی ادارے مل کر تعمیر کر رہے ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ نئے مصری دارالحکومت میں 20 لاکھ افراد کو روزگار کے نئے مواقع حاصل ہوں گے۔ نیا دارالحکومت محمد بن زاید الشمالی سیکٹر، کانفرنس سینٹر، ایگزیبیشن سٹی، سرکاری دفاتر کا علاقہ، شہریوں کا رہائشی علاقہ، میڈیکل سٹی، سپورٹس سٹی، سینٹرل پارک اور اسمارٹ سٹی پر مشتمل ہوگا۔

عرب میڈیا کے مطابق نئے مصری دارالحکومت کے سرکاری علاقے میں 18 وزارتوں کے دفاتر، پارلیمنٹ ہاؤس، ایوان صدر، ایوان وزارت عظمیٰ اور ’اوکتاغون ‘ کے نام سے وزارت دفاع کی نئی عمارت ہوگی جبکہ رہائشی علاقے میں 25 محلے بسائے جائیں گے۔ ان میں 11 لاکھ مکانات ہوں گے، ہوٹل کے 40 ہزار رومز ہوں گے جبکہ سڑکیں 10 ہزار کلو میٹر طویل ہوں گی۔

مصر کے نئے دارالحکومت کے سرکاری علاقے میں تمام وزارتوں اور پارلیمنٹ کی عمارتیں بنائی جائیں گی، بزنس زون بھی ہوگا جہاں بیشتر بینک قائم کئے جائیں گے، سینٹرل بزنس زون اینڈ ٹاورز بنائے جائیں گے، جہاں افریقا کا سب سے اونچا ٹاور بھی تعمیر ہوگا، بلند ترین ٹاور 94 منزلہ اور اس کی اونچائی 400 میٹر ہوگی۔

اس ٹاور میں ہوٹل اور دفاتر کھولے جائیں گے، پہلے مرحلے میں فلک بوس 18 ٹاورز تعمیر ہوں گے۔

مصر نے حال ہی میں نئے دارالحکومت کے ایئرپورٹ کا افتتاح کیا ہے، مصر کے وزیر آباد کاری عاصم الجزار نے اعلان کیا ہے کہ نئے دارالحکومت میں تقریباً 10 لاکھ افراد کام کیا کریں گے۔

مصری وزیراعظم مصطفیٰ مدبولی نے اعلان کیا تھا کہ نیا دارالحکومت سنگاپور جتنے رقبے پر تعمیر ہوگا، جس میں سرکاری دفاتر، سفارتخانے اور رہائشی عمارتیں ہوں گی۔ نیا دارالحکومت قاہرہ، السویس اور العین السخنہ شہروں کے درمیان بنایا جارہا ہے، یہاں دنیا کا سب سے بڑا پارک بھی قائم کیا جائے گا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube