Thursday, August 6, 2020  | 15 Zilhaj, 1441
ہوم   > بین الاقوامی

ترکی: تاریخی آیا صوفیہ دوبارہ مسجد بن گئی

SAMAA | - Posted: Jul 10, 2020 | Last Updated: 4 weeks ago
SAMAA |
Posted: Jul 10, 2020 | Last Updated: 4 weeks ago

 

ترکی کی عدالت نے تاریخی مسجد آیا صوفیہ کو عجائب گھر بنانے کا 1934ء میں حکومت کا حکم منسوخ کرتے ہوئے اسے دوبارہ مسجد بنانے کا حکم دیدیا۔ صدر رجب طیب اردوان نے فیصلے کی توثیق کردی۔

انڈیپینڈںٹ اردو کے مطابق ترکی کی اعلیٰ انتظامی عدالت کونسل آف اسٹیٹ نے  جمعہ کو کمال اتاترک کی حکومت کے فیصلے کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے تاریخی آیا صوفیہ کو مسجد بنانے کا حکم دیدیا۔ عالمی سطح پر اس اقدام کیخلاف انتباہ کے باوجود اس عدالتی فیصلے سے آیا صوفیہ کو دوبارہ مسجد میں تبدیل کرنے کی راہ ہموار ہوگئی ہے۔

ترک صدر رجب طیب اردوان نے یونیسکو کے عالمی تاریخی ورثے میں شامل اس مقام کو دوبارہ مسجد میں تبدیل کرنے کی تجویز دی تھی، آیا صوفیہ مسیحی بازنطینی اور مسلمان سلطنت عثمانیہ دونوں کیلئے بنیادی اہمیت کی حامل رہی ہے۔

عدالت کا فیصلہ آنے سے پہلے ہی یونان، روس اور امریکی حکام اس پر تشویش کا اظہار کرچکے ہیں۔ روس میں مشرقی آرتھوڈاکس کلیساؤں کے وفاق کے سربراہ نے کہا تھا کہ انہیں ترک حکومت کے اس اقدام پر تشویش ہے۔

انہوں نے ترک حکومت سے درخواست کی تھی کہ وہ اس معاملے میں احتیاط سے کام لیں۔ یونیسکو نے بھی ایک بیان میں اس اقدام پر تشویش کا اظہار کیا تھا۔

آیا صوفیہ کی تاریخ

اس عمارت کو 537ء میں تعمیر کیا گیا تھا ابتداء میں یہ مشرقی آرتھوڈاکس گرجا گھر تھا، جسے 13ویں صدی میں صلیبیوں نے رومن کیتھولک کتھیڈرل میں تبدیل کردیا تاہم کچھ عرصہ بعد ہی اسے دوبارہ آرتھوڈاکس چرچ بنادیا گیا۔ جب 1453ء میں عثمانیوں نے استنبول کو فتح کیا تو اس عمارت کو مسجد میں بدل دیا گیا تھا۔

مشہور عثمانی ماہرِ تعمیر سنان نے اس عمارت کے گنبد کے ساتھ 4 مینار تعمیر کئے اور مسجد کے اندر تصاویر ہٹاکر ان کی جگہ اسلامی خطاطی کی تھی، 1934ء میں جدید ترکی کے بانی مصطفیٰ کمال پاشا نے اسے عجائب گھر کی حیثیت دے دی تھی۔

ترک صدر رجب طیب اردوان ہمیشہ سے اسے مسجد بنانے کے خواہشمند رہے ہیں، سال 1994ء میں استنبول کے ناظم کا انتخاب لڑنے کے دوران انہوں نے اس عمارت کو نماز کیلئے کھولنے کا وعدہ کیا تھا جبکہ وہ 2018ء میں یہاں قرآن کی تلاوت بھی کرچکے ہیں۔

یونیسکو کی جانب سے اس عمارت کو 1985ء میں عالمی تاریخی ورثے میں شامل کیا گیا، ہر سال لاکھوں سیاح آیا صوفیہ کو دیکھنے کے آتے ہیں، یہ 2019ء میں 38 لاکھ سیاحوں کے ساتھ ترکی کا معروف ترین مقام تھا، حالیہ سالوں کے دوران اس میوزیم میں مذہبی سرگرمیوں میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube